خبرگزاری شبستان

دوشنبه ۱۱ اردیبهشت ۱۳۹۶

الاثنين ٥ شعبان ١٤٣٨

Monday, May 01, 2017

وقت :   Saturday, January 07, 2017 خبر کوڈ : 66327

ظہورکی تعجیل اورتاخیرمیں لوگوں کا کردار
خبررساں ایجنسی شبستان: امام زمانہ علیہ السلام کی غیبت میں لوگوں کےکردارکے ساتھ ساتھ غیبت کی حکمتیں اوردلیلیں لوگوں کے کردارسےکہیں بالاترہیں؛ بنابریں یہ نہیں کہا جاسکتا کہ لوگوں کےکردارکی وجہ سےظہورحتمی ہوجائے۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق حجۃ الاسلام والمسلمین خدامراد سلیمیان نےاپنی کتاب( حضرت امام مہدی علیہ السلام کےعالمی انقلاب میں لوگوں کا کردار) میں لکھا ہےکہ ظہورکی راہ ہموار کرنےکےحوالے سےایک بحث یہ کی جاتی ہے کہ کیا ظہورکی تعجیل یا تاخیرمیں لوگوں کا بھی کوئی کردار ہے یا نہیں؟ بالفاظ دیگرظہورایک اختیاری مسئلہ ہےیا جبری؟

 روایات کےپیش نظرظہورکے وقت کے بارے میں دو نظریے پائے جاتے ہیں:

ا۔ ظہورایک اختیاری موضوع ہےکہ جس میں لوگوں کا کرداراہم ہےاورانسانوں کےاعمال وکردارہی اس کو مشخص کرتے ہیں۔

۲۔ ظہورکا وقت اللہ تعالیٰ کےاختیارمیں ہے اوراس میں تعجیل اورتاخیر کا کوئی معنی نہیں ہے۔

اختیاری ہونےکا نظریہ

اس نظریےکی بنیاد اس پرقائم ہےکہ بعض روایات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے یہ ثابت کرے کہ ظہورہمارے اختیارمیں ہے۔ اس نظریےکی بنا پرظہورکےلیے جتنی جلدی آمادگی اورتیاری ہوگی،ظہوربھی اتنا ہی قریب ہوگا۔ جن لوگوں نے اس نظریے کو بیان کیا ہے انہوں نے سب سےپہلے بعض آیات کی طرف نسبت دی ہےکہ انسان کی قسمت اس کے اپنے ہاتھوں میں ہے۔

اس کے جواب میں کہنا چاہیےکہ اس قسم کی آیات کو دلیل بنا کرپیش کرنا اس وقت قابل قبول ہےکہ جب ہمیں تاکید کی گئی ہو کہ حضرت امام مہدی علیہ السلام کےظہورکے ساتھ اپنی تقدیرکو بدلیں؛ جب کہ آزمائش اورامتحان ہردورمیں اس دورکے ساتھ ہم آہنگ ہوتے ہیں اورتقدیر اورقسمت کی تبدیلی اسی دور کے ساتھ مطابقت رکھتی ہے۔ باالفاظ دیگر کسی بھی روایت میں ہمیں سفارش نہیں کی گئی کہ ہم ایسا کام انجام دیں تاکہ ظہورکا وقت قریب آجائے اورپھراس دورمیں اپنے کردارکے ساتھ سعادت کی منزل پرفائزہوجائیں بلکہ ہمیں اسی دورکی ذمہ داریوں کا ذمہ دارقراردیا گیا ہے۔

شاید کوئی کہےکہ امام مہدی علیہ السلام کی غیبت کا ایک بنیادی ترین سبب ہم انسانوں کا کرداراورعمل ہے۔ بنابریں یہ انسان ہیں کہ جو اپنےکردارمیں تبدیلی ایجاد کرکےظہورکو نزدیک کرسکتےہیں۔ اس نظریےکا نتیجہ یہ ہےکہ ظہورانسانوں کےاختیارمیں ہے۔

کہا جاتا ہےکہ اگر اس دورمیں غیبت کی دلیلوں اورانسانوں کی آزمائش سےچشم پوشی اختیارکریں، توکچھ ایسی روایات بھی ہیں کہ جن میں حضرت امام زمانہ علیہ السلام کی غیبت کو اللہ تعالیٰ کے رازوں میں سےایک راز قراردیا گیا ہے؛ جس طرح کہ امام علیہ السلام کےظہورکو اسرارالہی میں سےقراردیا گیا ہے۔ رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نےاس موضوع کے رازہونےکی حقیقت کے بارے میں فرمایا ہےکہ«یَا جَابِرُ إِنَّ هَذَا أَمْرٌ مِنْ أَمْرِ اللَّهِ عَزَّ وَ جَلَّ وَ سِرٌّ مِنْ سِرِّ اللَّهِ عِلْمُهُ مَطْوِیٌّ عَنْ عِبَادِ اللَّهِ إِیَّاکَ وَ الشَّکَّ فِیهِ فَإِنَّ الشَّکَّ فِی أَمْرِ اللَّهِ عَزَّ وَ جَلَّ کُفْرٌ) اے جابر بتحقیق یہ مسئلہ ایک ایسا مسئلہ ہےکہ جو اللہ تعالی کا امر ہے اوراس کا ایک راز ہے کہ جو اس کے بندوں سے پوشیدہ ہے۔ لہذا خبردارشک وتردید کا شکارنہ ہونا۔ کیونکہ اللہ تعالیٰ کے امرکے بارے میں شک کرنا کفرہے۔

ظہورمیں لوگوں کےکردارپرایک دلیل وہ روایت ہےکہ جسے ابوحمزہ ثمالی نےامام باقرعلیہ السلام سےنقل کیا ہےکہ آپ نے فرمایا::«یَا ثَابِتُ إِنَّ اللَّهَ تَبَارَکَ وَ تَعَالَی قَدْ کَانَ وَقَّتَ هَذَا الْأَمْرَ فِی السَّبْعِینَ فَلَمَّا أَنْ قُتِلَ الْحُسَیْنُ صَلَوَاتُ اللَّهِ عَلَیْهِ اشْتَدَّ غَضَبُ اللَّهِ تَعَالَی عَلَی أَهْلِ الْأَرْضِ فَأَخَّرَهُ إِلَی أَرْبَعِینَ وَ مِائَةٍ فَحَدَّثْنَاکُمْ فَأَذَعْتُمُ الْحَدِیثَ فَکَشَفْتُمْ قِنَاعَ السَّتْرِ وَ لَمْ یَجْعَلِ اللَّهُ لَهُ بَعْدَ ذَلِکَ وَقْتاً عِنْدَنَا وَ یَمْحُو اللَّهُ مَا یَشَاءُ وَ یُثْبِتُ وَ عِنْدَهُ أُمُّ الْکِتَابِ)

ابوحمزہ کہتے ہیں کہ میں نےامام صادق علیہ السلام کی خدمت میں یہ حدیث عرض کی تو آپ نے فرمایا کہ ایسا ہی ہے۔

596944

 

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

آیت اللہ زین العابدین قربانی:

حجت الاسلام قرائتی سادہ زبان تبلیغ اسلام کے بانیوں میں سے ہیں

سماجی: ایران کے صوبہ گیلان میں نمائںدہ ولی فقیہ نے کہا حجت الاسلام قرائتی سادہ اور فنی زبان میں تبلیغ اسلام کے بانیوں میں سے ہیں۔

منتخب خبریں