خبرگزاری شبستان

پنج شنبه ۱ تیر ۱۳۹۶

الخميس ٢٨ رمضان ١٤٣٨

Thursday, June 22, 2017

وقت :   Monday, January 09, 2017 خبر کوڈ : 66348

امام کاظم(ع) نےحضرت معصومہ(س) سے( فداھا ابوھا) کیوں فرمایا ؟
خبررساں ایجنسی شبستان: امام موسیٰ کاظم علیہ السلام جوابات کے ہمراہ سوالات کو لیتے ہیں اوردیکھتے ہیں کہ حضرت معصومہ سلام اللہ علیہا نے کتنے خوبصورت اوردقیق اندازکےساتھ سوالات کےجوابات دیے ہیں۔ اس وقت امام کی آنکھوں سے آنسو جاری ہوجاتےہیں اورتین مرتبہ فرماتے ہیں: فداھا ابوھا

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق حضرت امام موسیٰ کاظم علیہ السلام کے زندگی میں آپ کےکچھ اصحاب اور چاہنے والےکہ جو مدینہ سے باہرکہیں رہتے تھے،امام علیہ السلام کی زیارت کرنےاورکچھ سوالات لےکرمدینہ میں آپ کی خدمت میں آئے۔ جب گھر کا دروازہ کھٹکھٹایا گیا توحضرت معصومہ سلام اللہ علیہا دروازے کے پیچھے سےآکر انہیں خبردیتی ہیں کہ ان کے والد گرامی گھرمیں تشریف فرما نہیں ہیں۔ وہ شیعہ عرض کرتے ہیں کہ ہم مدینہ کے باہرسےآئے ہیں اورہمارے پاس کچھ سوالات ہیں۔ یہاں پرحضرت معصومہ سلام اللہ علیہا ان سےفرماتی ہیں کہ لائیں سوالات مجھے دیں اورپھرفرماتی ہیں کہ کل آکر اپنے سوالوں کےجوابات لے جانا۔ وہ ایک رات مدینہ میں ہی رکتے ہیں اوراگلے دن وہ امام کےگھرمیں آتے ہیں لیکن امام علیہ السلام ابھی تک واپس گھرنہیں آئے ہوئے تھے تاہم حضرت معصومہ سلام اللہ علیہا کی جانب سے انہیں سوالوں کے جوابات مل جاتے ہیں۔ وہ اپنے سوالوں کےجوابات لےکرجارہے ہوتے ہیں کہ راستے میں امام کاظم علیہ السلام سے ان کی ملاقات ہوجاتی ہے۔ وہ امام علیہ السلام کو دیکھ کرخوش ہوجاتے ہیں اورپھرامام کے سامنے پورا واقعہ بیان کرتے ہیں۔ امام علیہ السلام جوابات سمیت سوالوں کا مطالعہ کرتے ہیں اوردیکھتےہیں کہ حضرت معصومہ سلام اللہ علیہا نےانتہائی خوبصورت اوردقیق اندازمیں تمام سوالوں کےجوابات دیے ہیں۔ اس وقت امام علیہ السلام کی آنکھوں سےآنسوجاری ہوجاتےہیں اورتین مرتبہ فرماتےہیں: فداھا ابوھا، فداھا ابوھا، فداھا ابوھا۔ یعنی وہ جملہ کہ جو حضرت پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے حضرت فاطمہ زہرا سلام اللہ علیہا کے بارے میں فرمایا تھا۔

حضرت فاطمہ معصومہ سلام اللہ علیہا کی رحلت کی مناسبت سے خبررساں ایجنسی شبستان کے نامہ نگارنے دینی امورکی ماہرافتخارالسادات قافلہ باشی کےساتھ حضرت فاطمہ معصومہ سلام اللہ علیہا کی زندگی کےمختلف پہلووں کےبارے میں گفتگو کی ہے کہ جس کا خلاصہ قارئین کے پیش خدمت ہے۔

انہوں نےحضرت معصومہ سلام اللہ علیہا کی کرامات کے بارے میں بات کرتے ہوئےکہا ہےکہ اس بارے میں بہت زیادہ اقوال نقل ہوئے ہیں۔ بہت سےعلماء حضرت معصومہ سلام اللہ علیہا کی خدمت میں جاکرآپ سے توسل کیا  کرتے تھےاوراپنی حاجت لے کر واپس آیا کرتے تھے، جیسا کہ آج بھی یہی صورتحال ہے۔ ان تمام کرامات میں سےایک کرامت کو نمونہ کے طورپرپیش کرتی ہوں۔ معروف اسلامی فیلسوف صدرالمتالہین فرماتے ہیں کہ جب بھی مجھے کوئی مشکل پیش آتی اورکسی علمی مسئلےکو حل کرنے میں عاجزہوجاتا تو کہک سے قم کی طرف جاتا اورحرم مطہرحضرت معصومہ سلام اللہ علیہا مشرف ہوتا اورحرم میں دو رکعت نماز پڑھتا اوراپنی علمی مشکل کو حل کرتا تھا۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ حضرت معصومہ سلام اللہ علیہا کی زیارت کی فضیلت کے بارے میں بہت سی احادیث نقل ہوئی ہیں۔ جن میں سےایک حدیث میں امام صادق علیہ  السلام فرماتے ہیں:"امراه من اولادی تسمی فاطمة فمن زارها وَجَبَتْ له الجنة". فرماتے ہیں کہ میری اولاد میں سےایک خاتون کہ جس کا نام فاطمہ ہے، جوبھی اس کی زیارت کرے گا جنت اس پرواجب ہوجائے گی۔

ایک اورحدیث میں آیا ہے :"ان للّه حرماً و هو مکه ألا انَّ لرسول اللّه حرماً و هوالمدینة ألا وان لامیرالمؤمنین علیه السلام حرماً و هو الکوفه الا و انَّ قم الکوفة الضغیرة ألا ان للجنة ثمانیه ابواب ثلاثه منها الى قم تقبض فیها اموأة من ولدى اسمها فاطمه بنت موسى علیها السلام و تدخل بشفاعتها شیعتى الجنة با جمعهم۔ بتحقیق اللہ تعالی کے لیےایک حرم ہےاوروہ مکہ ہے اوررسول خدا صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے لیے ایک حرم ہے اوروہ مدینہ ہے اورامیرالمومنین علیہ السلام کے لیے ایک حرم ہے اوروہ کوفہ ہے اورقم ایک ایسا حرم ہےکہ جہاں پرامام موسیٰ کاظم علیہ السلام کی بیٹی فاطمہ دفن ہوں گی اورجو زائربھی اس کی زیارت کرے گا اس پرجنت واجب ہوگی۔

امام رضا علیہ السلام بھی ایک انتہائی خوبصورت تعبیر میں فرماتے ہیں : (من زارھا بقم کمن زاری) جس نےقم میں میری بہن کی زیارت کی گویا کہ اس نے میری زیارت کی ہے۔ البتہ شرط  یہ ہےکہ وہ آپ کے حق کی معرفت رکھتا ہوں اورجانتا ہوں کہ کس کی زیارت کررہا ہے۔

امام جواد علیہ السلام ایک حدیث میں فرماتے ہیں:"مَنْ زَارَ قَبْرَ عَمَّتِي بِقُمَّ فَلَهُ الْجَنَّةُ جس نے بھی قم میں میری پھوپھی امام کی زیارت کی جنت اس پرواجب ہوجاتی ہے۔

600122

 

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

حجۃ الاسلام حسن روحانی:

ایرانی عوام کی کامیابیاں،اللہ کی راہ میں قربانی اورجہاد کےمرہون منت ہیں

خبررساں ایجنسی شبستان: ایرانی صدر نےشہداء کےاہل خانہ کی ضیافت افطارمیں شہادت اورقربانی کوانتہائی گرانقدراورعظیم قراردیتے ہوئےکہا ہے کہ ایرانی عوام کی کامیابیاں، اللہ کی راہ میں قربانی اورجہاد کے مرہون منت ہیں۔

منتخب خبریں