خبرگزاری شبستان

یکشنبه ۱۰ اردیبهشت ۱۳۹۶

الأحد ٤ شعبان ١٤٣٨

Sunday, April 30, 2017

وقت :   Wednesday, January 11, 2017 خبر کوڈ : 66375

توبہ کی مہلت کےبارے میں رسول اللہ(ص) کی ایک حدیث
خبررساں ایجنسی شبستان: پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ایک حدیث میں فرماتےہیں کہ اللہ تعالیٰ اس وقت تک بندے کی توبہ قبول کرتا ہےکہ جب تک اس کی جان کنی کا وقت نہیں آن پہنچتا ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق رسول گرامی اسلام صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ایک حدیث میں فرماتے ہیں کہ اللہ تعالیٰ اس وقت تک بندے کی توبہ قبول کرتا ہےجب تک اس کی جان کنی کا وقت نہیں آتا ہے۔ اس کےعلاوہ شیعہ راویوں نے ائمہ اہل بیت علیہم السلام سے بہت سی احادیث نقل کی ہیں کہ جن کی بنا پر موت اوراس کی علامات ظاہرہونےکے وقت انسان کی توبہ قبول نہیں ہوتی ہے۔ علامہ حسن زادہ آملی نے اپنی کتاب(الاوبہ الی التوبہ من الحوبہ) میں توبہ کےبارے میں مطالب بیان کیے ہیں۔

کتاب ریاض السالکین میں ہےکہ شیخ بہائی شرح الاربعین میں فرماتے ہیں کہ توبہ میں اس چیزکا عزم ضروری ہےکہ وہ اپنی باقی زندگی میں دوبارہ گناہ کی طرف نہ پلٹے۔ لیکن کیا توبہ کرنے والےشخص سے دوبارہ گناہ کا سرزد نہ ہونا توبہ کےصحیح ہونےکی شرط ہے؟ مثال کےطورپراگرکسی نے زنا کا ارتکاب کیا ہو اورپھراس نے توبہ کرلی ہو اورپھر وہ یہ ارادہ کرے کہ اب وہ ہرگز یہ گناہ نہیں کرےگا، کیا گناہ انجام دینےکی قدرت رکھنے کی صورت میں اس کی توبہ صحیح ہے یا یہ کہ قدرت کا  وجود توبہ کےصحیح ہونے کی شرط نہیں ہے؟

اکثرعلماء دوسری وجہ کے قائل ہیں لیکن اس بات پرسب کا اتفاق ہےکہ موت کے وقت توبہ صحیح نہیں ہےاورقرآن کریم نے بھی فرمایا ہے کہ جو شخص اپنی پوری زندگی برےاعمال میں مشغول رہا ہو اورجب وہ موت کا مشاہدہ کرے تو اس وقت پشیمان ہوجائےاورکہےکہ میں توبہ کرتا ہوں تو اس کی توبہ قابل قبول نہیں ہے؛ جس طرح کہ جو شخص بھی کفرکی حالت میں مرجائے اس کی توبہ قبول نہیں ہوتی؛کیونکہ ہم نے اس کےلیےدردناک عذاب تیارکررکھا ہے۔

قرآنی آیات میں واضح آیا ہےکہ موت کے یقین اورزندگی سےمایوسی کےوقت توبہ قبول نہیں ہے،اس وقت نیک اعمال انجام دینے اورگناہوں اوربرائیوں کوترک کرنےکا وقت نہیں ہے۔ بنابریں موت کے وقت شخص کےاعمال ذمہ داری کی حد سےخارج ہیں ، بنابریں اس کی توبہ بھی صحیح نہیں ہوگی۔

بنابریں آیات وروایات،عقلی دلیل اوراجماع اس بات پرگواہ ہیں کہ موت کے وقت توبہ قبول نہیں ہے۔ امام باقرعلیہ السلام سے منقول ہےکہ آپ نےفرمایا کہ جب جان گلےمیں پہنچتی ہے توعالم کی توبہ قبول نہیں ہےجبکہ نادان کی توبہ قبول ہے۔

598643

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

ایران میں پاکستانی قونصل جنرل کی طلبی، پاک، ایران سرحد پر دہشتگردی واقعے پر شدید احتجاج

شبستان نیوز ایجنسی: پاک،ايران سرحد کے قريب ميرجاوہ کے علاقے ميں ايراني فورسز پر دہشت گردوں کے حملے سے اہلکاروں کي شہادت پر صوبہ سيستان و بلوچستان کے گورنر جنرل نے پاکستاني قونصل جنرل کو طلب کرکے اس واقعے پر احتجاج کيا.

منتخب خبریں