خبرگزاری شبستان

پنج شنبه ۱ تیر ۱۳۹۶

الخميس ٢٨ رمضان ١٤٣٨

Thursday, June 22, 2017

وقت :   Saturday, March 18, 2017 خبر کوڈ : 67277

آیت اللہ مدرسی کی ترک وزیر اعظم اردوغان کو نصیحت
خبررساں ایجنسی شبستان آیۃ اللہ محمد تقی المدرسی کہ جو عراق کے شیعوں کے مشہور دینی مرجع ہیں، نے ایک بیان میں ایسے لوگوں کو جو داعش کے ہاتھوں گمراہ ہوئے لیکن ان کے ہاتھ عراقیوں کے خون سے آلودہ نہیں ہیں توبہ کی دعوت دی ،اور عراقی رہنماوں کو دہشت گردی کے خلاف جنگ میں کامیابی کے بعد عراقی قوم میں اتحاد قائم کرنے کا ذمہ دار ٹھہرایا ۔

انہوں نے اپنے ہفتہ وار بیان میں داعش کے ذریعے گمراہ ہونے والوں کو وطن کی آغوش میں واپسی کی دعوت دی اور کہا : ملک اس بات کی ضمانت دیتا ہے کہ ان کے خلاف عادلانہ مقدمہ چلایا جائے گا ۔ کسی بھی جنگ سے اسلام کا مقصد صلح ہوتا ہے اور یہ چیز گنہگاروں کے لیے بھی صادق آتی ہے ۔

عراق کے اس مرجع تقلید نے لوگوں سے کہا کہ وہ مسلح افواج کی زیادہ حمایت کریں اور ان بے وطن افراد کو کہ جنہوں نے فوجی کاروائیوں سے ڈر کر اپنے گھروں کو چھوڑ دیا تھا انہیں اپنے گھروں میں آنے دیں ۔ اس نے عراق کے رہنماوں سے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف طے شدہ کامیابی کے بعد عراق کے عوام کے درمیان اتحاد قائم کرنے کی کوشش کریں ۔

شیعوں کے اس مرجع نے کہا : ہمارے سامنے بہت بڑی ذمہ داری ہے اس لیے کہ قوموں ، فرقوں اور پارٹیوں کے درمیان جو شگاف پڑا ہے اس کو ہمیں دور کرنا ہے ۔

آپ نے تاکید کی : اعتدال پسند اسلام ایک پناہ گاہ ہے کہ جس میں عراق کی ہر صنف کے لوگ پناہ لے سکتے ہیں اور ملک کا قانون اختلافات کو دور کرنے کے لیے بہترین مرجع ہے ۔

المدرسی نے علمائے اسلام یونیورسٹی کے طبقے اور سیاسی رہنماوں کو مختلف ٹریبونوں کے ذریعے گفتگو کی دعوت دی تاکہ قومی مفادات اور مشترکہ عقاید کے سلسلے میں آپس میں اتحاد پیدا کیا جا سکے ۔

آپ نے بین الاقوامی مسائل کے سلسلے میں عراق کے ہمسایہ ترکی سے مطالبہ کیا کہ اس سے پہلے کہ موقعہ ہاتھ سے نکل جائے وہ اسلام کی آغوش میں واپس آ جائے اور اردوغان سے خطاب کرتے ہوئے کہا : کیا اب وہ وقت نہیں آیا ہے کہ وہ یورپ کا دروازہ کھٹکھٹانے سے باز آ جائے ؟ کیا وہ وقت نہیں آیا ہے کہ تم اسلامی ماحول میں واپس آ جاو اور اپنے ملک کے ساتھ گھل مل جاو ؟

المدرسی نے اظہار خیال کیا : کچھ لوگ یورپ میں ابھی تک صلیبی جنگ کی فضا  میں زندگی بسر کر رہے ہیں لیکن آپ کو اسلامی امت کی آغوش میں واپس آ جا نا چاہیے ۔

اس سے پہلے اس مرجع دینی نے عراق ، ترکی اور ایران سے مطالبہ کیا تھا کہ ایک کنفیڈرل اتحاد تشکیل دیں کہ جس میں متحدہ اسلامی ریاستیں وجود میں آئیں ۔

انہوں نے امریکہ کی حکومت سے بھی مطالبہ کیا کہ وہ دہشت گردی کی جڑوں کو خشک کر دے ۔  

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

حجۃ الاسلام حسن روحانی:

ایرانی عوام کی کامیابیاں،اللہ کی راہ میں قربانی اورجہاد کےمرہون منت ہیں

خبررساں ایجنسی شبستان: ایرانی صدر نےشہداء کےاہل خانہ کی ضیافت افطارمیں شہادت اورقربانی کوانتہائی گرانقدراورعظیم قراردیتے ہوئےکہا ہے کہ ایرانی عوام کی کامیابیاں، اللہ کی راہ میں قربانی اورجہاد کے مرہون منت ہیں۔

منتخب خبریں