خبرگزاری شبستان

شنبه ۱ مهر ۱۳۹۶

السبت ٣ المحرّم ١٤٣٩

Saturday, September 23, 2017

وقت :   Monday, April 10, 2017 خبر کوڈ : 67467

کیا امام زمانہ(عج) بھی اعتکاف بیٹھتے ہیں؟
خبررساں ایجنسی شبستان: قرآن کریم فرماتاہے: «أَنْ طَهِّرَا بَيْتِىَ لِلطَّائِفِينَ وَالْعَاكِفِينَ وَالرُّكَّعِ السُّجُودِ...) اللہ تعالیٰ اپنےدو نبیوں یعنی حضرت ابراہیم اورحضرت اسماعیل علیہما السلام کو حکم دیتا ہے کہ طواف کرنے والوں اوراعتکاف میں بیٹھنے والوں کے لیے میرے گھرکو شرک سے پاک کرو ۔ ۔ ۔

مہدویت کےمحقق حجۃ الاسلام عباس رمضان علی زادہ نےخبررساں ایجنسی شبستان کے نامہ نگار سے گفتگو کے دوران امام زمانہ علیہ السلام سے ارتباط قائم کرنے کے لیے ماہ رجب کی صلاحیت کے بارے میں کہا ہے کہ ماہ رجب میں دو مسئلے ہمیں امام زمانہ علیہ السلام سے جوڑ سکتے ہیں ایک اس مہینےکی عبادات اوردوسرا اس مہینے کی مناسبتیں ۔ عبادات کے حوالے سے کہنا چاہیے کہ ماہ رجب عبادت اوربندگی کی بہارہے اوراسے(شہراللہ) سے یاد کیا گیا ہے اوراس مہینے کی ایک عبادت امام زمانہ علیہ السلام کی عبادات کی طرف متوجہ ہونا ہے۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ قیامت کے دن ایک آواز سنائی دے گی کہ(این الرجبیون؟) اہل رجب(یعنی جنہوں نے رجب کےاعمال انجام دیے ہوں گے) کہاں ہیں؟ اس مہینےکا ایک عمل، تہلیل یعنی دن رات ہزارمرتبہ(لاالہ الا اللہ) کہنا ہے۔ اب اس عمل سے ہم امام زمانہ علیہ السلام کی تہلیل کو بھی یاد کر سکتے ہیں۔ جیسا کہ ہم زیارت آل یاسین میں کہتے ہیں:( السلام علیک حین تھلل وتکبر)۔ اسی طرح یہ  کلمہ ہمیں امام رضا علیہ السلام کی اس حدیث کی یاد دلاتا ہےکہ جب آپ نے نیشاپورمیں فرمایا تھا: «کلمه لا اله الا الله حصنی فمن دخل حصنی امن من عذابی) اس کے بعد امام علیہ السلام نے فرمایا: «به شرطها و شروطها و انا من شروطها...» یعنی توحید کی کچھ شرائط ہیں اوران شرائط میں ایک شرط مسئلہ امامت ہے۔

حجۃ الاسلام رمضان علی زادہ نےمزید کہا ہےکہ اس حدیث قدسی سےاستفادہ ہوتا ہےکہ امامت کو توحید کے ساتھ ملا ہونا چاہیے یعنی تہلیل کہتے وقت اس نکتے پرتوجہ دینی چاہیےکہ اشھد ان علی ولی اللہ اورآج کے دورمیں اشھد ان مھدی ولی اللہ کا اقراربھی ضروری ہےتاکہ توحید موثرواقع ہو۔

انہوں نےکہا ہےکہ اگرکوئی ماہ رجب اورماہ شعبان میں روزے رکھے گا تو موت کی سختیوں سے بھی نجات پیدا کرے گا۔ جس طرح روزہ موت کی سختیوں کو آسان کردیتا ہے اسی طرح آل محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی محبت اورولایت بھی یہی اثررکھتی ہے اورآل محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ایک ہستی کا نام امام زمانہ عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف ہیں کہ جن کی ولایت سے موت کی سختیاں آسان ہوجاتی ہیں۔

انہوں نے کہا ہےکہ رجب کا ایک اوراہم عمل اعتکاف ہے۔ اعتکاف ایک مستحب عمل ہےاورجب انسان اپنےآپ کو پاک کرنا چاہتا ہوتواسے تین دن رات مسجد میں اعتکاف بیٹھنا چاہیے۔ پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ہرسال دس دن تک رمضان المبارک کے آخری عشرے میں مسجد میں اعتکاف بیٹھتے تھے۔ ائمہ اطہارعلیہم السلام بھی اسی طرح تھے۔ قرآن کریم فرماتا ہے: «أَنْ طَهِّرَا بَيْتِىَ لِلطَّائِفِينَ وَالْعَاكِفِينَ وَالرُّكَّعِ السُّجُودِ۔ ۔ ۔) اللہ تعالیٰ اپنے دو پیغمبروں حضرت ابراہیم اورحضرت اسماعیل علیہما السلام کو حکم دیتا ہے کہ طواف کرنے والوں اوراعتکاف میں بیٹھنے والوں کے لے میرے گھرکو شرک سے پاک کرو۔ امام صادق علیہ السلام نے فرمایا ہے:(نحن العاکفون) یعنی ہم اعتکاف کرنے والے ہیں۔ یعنی ہم مسجد الحرام میں اعتکاف کرنے والے ہیں۔ پس بنابریں امام زمانہ علیہ السلام بھی اپنے آباواجداد کی طرح اعتکاف میں بیٹھتے ہیں۔

۶۱۹۶۱۶

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

آیت اللہ سید احمد میرعمادی:

مکتب عاشورا کا اہم ترین درس خدا کیلئے قیام ہے

سماجی: ایران کے صوبہ لرستان میں نمائندہ ولی فقیہ نے ذلت پر عزت کو ترجیح دینے کو مکتب حسینی کا عظیم درس قرار دیتے ہوئے کہا قیام عاشورا کا سب سے بڑا درس خدا کیلئے قیام ہے۔

منتخب خبریں