خبرگزاری شبستان

پنج شنبه ۲۳ آذر ۱۳۹۶

الخميس ٢٦ ربيع الأوّل ١٤٣٩

Thursday, December 14, 2017

وقت :   Thursday, April 20, 2017 خبر کوڈ : 67565
حجۃ الاسلام ملّایی:
غذا اورانتطارکا باہمی رابطہ
خبررساں ایجنسی شبستان:منتظرانہ طرززندگی کا ایک جلوہ ایک منتظرشخص کی غذا کی مقداراور کیفیت سے مربوط ہے کیونکہ امام زمانہ علیہ السلام کےمنتظرین ایک جانب سے اس قرآنی خطاب (فَلْیَنْظُرِ الْإِنْسانُ إِلى طَعامِهِ) کےمخاطب ہیں اوردوسری جانب جسمانی لحاظ سے اپنے آپ کو مضبوط کرنا ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق مہدویت تخصصی سنٹرکے گروہ اخلاق وتربیت کے انچارج حجۃ الاسلام حسن ملّایی نےمنتظرانہ طرززندگی کےدائرہ کارکی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہےکہ منتظرانہ طرززندگی کا ایک جلوہ ایک منتظرشخص کی غذا کی مقداراورکیفیت سے مربوط ہے کیونکہ امام زمانہ علیہ السلام کےمنتظرین ایک جانب سے اس قرآنی خطاب(فَلْیَنْظُرِ الْإِنْسانُ إِلى طَعامِهِ) کےمخاطب ہیں یعنی غذائی مواد کے استعمال میں دقت کریں اوردوسری جانب  منتظرانہ زندگی کےجہادی ہونےکے پیش نظر ایک منتظرشخص کو اپنی اس زندگی میں امام علیہ السلام کی نصرت کے لیے آماہ ہو۔ بنابریں اسےاپنی جسمانی  سلامتی اورتوانائی پربھی توجہ دینی چاہیے۔

انہوں نےحلال غذائی مواد کے استعمال پرتوجہ کو ظہورکےمنتظرین کی ایک ذمہ داری قراردیتے ہوئے کہا ہےکہ حلال کھانا ایک اہم نقطہ ہے کہ تمام مسلمانوں بالخصوص امام زمانہ علیہ السلام کے منتظرین کو جس پرتوجہ دینی چاہیے۔ یعنی ایک منتظرکی آمدن کا ذریعہ حلال اورجائزہونا چاہیے۔

حجۃ الاسلام ملّایی نےمزید کہا ہےکہ قرآنی آیات کی بنا پرغذا کی کی آمدن حلال اورطیب ہونی چاہیےالبتہ طیب ہونےسےمراد فقط پاک وپاکیزہ ہونا نہیں ہےبلکہ مفسرین قرآن کریم کے نظریے کی بنا پریہاں پرطیب سےمراد ظاہری اورباطنی لحاظ سےپاک وپاکیزہ ہونا ہے۔

انہوں نےکہا ہے کہ ایک غذا کے طیب ہونے کا جائزہ  لینے کےلیے فقط اس کے ظاہرپرہی توجہ نہیں دینی چاہیے بلکہ اس کےعناصرکا بھی جائزہ لینا چاہیے تاکہ انسان کو کوئی نقصان نہ پہنچے۔ اللہ تعالیٰ نے سورہ مبارکہ مائدہ کی آیت نمبر۸۸ میں حلال اورطیب رزق کے استعمال کو تقویٰ الہی کا پیش خیمہ قراردیتے ہوئے فرمایا ہے:( وَ کُلُوا مِمَّا رَزَقَکُمُ اللَّهُ حَلالاً طَيِّباً وَ اتَّقُوا اللَّهَ الَّذي أَنْتُمْ بِهِ مُؤْمِنُونَ)۔

امام صادق علیہ السلام فرماتے ہیں: جو شخص امام زمانہ عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کے ساتھیوں میں سے ہونا چاہتا ہے سب سے پہلے اسے متقی اورپرہیزگارہونا چاہیے۔ لہذا امام زمانہ علیہ السلام کا ساتھی بننے کے لیے حلال رزق کھانا چاہیے اورحرام کھانے اوررشوت لینے جیسے کاموں سے اجتناب کرنا چاہیے۔

انہوں نےمزید کہا ہے کہ کتاب من لایحضرہ الفقیہ کی جلد نمبر۱ کے صفحہ نمبر۲۵۲ پرامام صادق علیہ السلام کی ایک حدیث نقل ہوئی ہے کہ جس میں آپ فرماتے ہیں: اللہ تعالیٰ نے اپنےایک نبی کو وحی کی کہ بندوں سےکہہ دو: (لَا تَلْبَسُوا لِبَاسَ أَعْدَائِي وَلَا یطْعَمُوا طَعَامَ أَعْدَائِي وَلَا یَسْلُكُوا مَسَالِكَ أَعْدَائِي فَیَكُونُوا أَعْدَائِي كَمَا هُمْ أَعْدَائِي)۔ مومنین سے کہہ دیجیے کہ میرے دشمنوں کا لباس نہ پہنو، میرے دشمنوں کی غذا نہ کھاو اورمیرے دشمنوں کا طرززندگی نہ اپناو، کیونکہ اس صورت میں وہ بھی میرے دشمنوں کی طرح ہوجائیں گے۔ یہ روایت منتظرانہ طرززندگی کے جہادی ہونے کی وضاحت کرتی ہے۔

۶۱۶۹۹۶

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

غزہ پر اسرائیلی جارحیت میں درجنوں فلسطینی زخمی

خبررساں ایجنسی شبستان اسرائیل کے جنگی طیاروں نے بدھ کی رات اور جمعرات کی صبح غزہ پر شدید ترین فضائی حملے کیے۔ اگرچہ بدھ کی شب اور جمعرات کی صبح ہونے والے حملوں میں جانی اور مالی نقصان کی اطلاعات تاحال موصول نہیں ہوئی ہیں تاہم سیکورٹی و طبی ذرائع کا کہنا ہے شمالی غزہ کا علاقہ اسرائیل کے حملوں کا مرکز تھا۔

منتخب خبریں