خبرگزاری شبستان

دوشنبه ۲۷ آذر ۱۳۹۶

الاثنين ٣٠ ربيع الأوّل ١٤٣٩

Monday, December 18, 2017

وقت :   Thursday, June 15, 2017 خبر کوڈ : 68245
قائد انقلاب اسلامی:
لیلۃ القدر، مومن کی معراج ہےاس میں مادی غلاظتوں سےدورہونا چاہیے
خبررساں ایجنسی شبستان:لیلۃ القدرکی بہت زیادہ اہمیت ہے۔ پورے ماہ رمضان اوراس کی راتیں اوراس کے ایام بہت زیادہ اہمیت رکھتے ہیں۔البتہ لیلۃ القدرماہ مبارک رمضان کے دیگرایام اورراتوں سے زیادہ اہمیت رکھتی ہے؛ لیکن ماہ رمضان کے ایام اوراس کی راتیں سال کے باقی ایام اورراتوں کی نسبت بہت زیادہ اہمیت رکھتی ہیں۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق لیالی قدر کی آمد کی مناسبت سے ان راتوں کی عظمت کے بارے میں قائد انقلاب اسلامی کے بعض خطابات کو یہاں پرپیش کیا جاتا ہے:

ایک روایت میں آیا ہے کہ (فمن لم یغفرلہ فی رمضان ففی ایّ شھریغفرلہ) اگرکوئی ماہ رمضان (کہ جس میں انسانوں پررحمت اورمغفرت الہی کے دروازے کھل جاتے ہیں) میں الہی رحمت اورمغفرت کو حاصل نہ کرپائے تو پھرکب اسےاس طرح کی توفیق نصیب ہوگی؟

 الہی ضیافت اوردسترخوان کا ایک آئٹم لیلۃ القدر ہے۔ اللہ تعالیٰ فرماتا ہے:(لیلۃ القدرخیرمن الف شھر) لیلۃ القدر ہزارمہینوں سےافضل ہے۔ لیلۃ القدرکےگرانقدرلمحات میں مومن کو زیادہ سے زیادہ استفادہ کرنا چاہیے۔ اس رات کا بہترین عمل ، دعا ہے۔ان راتوں کے احیاء کا مقصد بھی دعا ،توسل اورذکر ہے اورنماز بھی درحقیقت دعا اورذکرکا مظہر ہے۔ روایت میں آیا ہے کہ دعا عبادت کا مغز ہے، یا ہمارے تعبیرات کے مطابل دعا روح عبادت ہے۔ دعا یعنی اللہ تعالیٰ سے ہمکلا م ہونا، درحقیقت اللہ تعالیٰ کو اپنے قریب محسوس کرنا اوراس  کے سامنے اپنے دل کی بات کرنا ہے۔ دعا یا درخواست ہے یا تعریف وتمجید کا نام ہے،یا پھرمحبت اورعشق کے اظہارکا نام ہے۔ایک مومن بندے کا اہم ترین کام دعا ہے۔

شب قدر،مومن کی معراج ہے لہذا ایسا کام کریں کہ عروج کریں اورمادی غلاظتوں اورکثافتوں سے دوری اختیارکریں کہ بہت سےانسان جن میں مبتلا ہیں۔ دنیا سے وابستگی، بداخلاقی، غیرانسانی صفات، ظالمانہ جذبے، ظلم وستم ،برائیاں  یہ سب انسانی روح کی غلاظتیں ہیں۔ ان عظیم راتوں میں ہمیں ان تمام غلاظتوں اورکثافتوں سے دورکرنا چاہیے۔

شب قدر، ولایت کی شب ہے۔ نزول قرآن کی رات بھی ہے اورامام زمانہ علیہ السلام پرفرشتوں کے نازل ہونے کی رات بھی ہے۔ قرآن کی رات بھی ہے اوراہل بیت علیہم السلام کی رات بھی ہے۔ لہذا سورہ مبارکہ قدر،سورہ ولایت بھی ہے۔

شب قدران تین راتوں کے درمیان پوشیدہ ہے۔ مرحوم محدث قمی سے نقل ہونے والی روایت کے مطابق سوال کیا گیا کہ ان تین راتوں میں سے کون سی رات شب قدر ہے؟ جواب میں فرمایا: یہ کتنا آسان  ہےکہ انسان دو یا تین راتوں میں شب قدرکا ملاحظہ کرے۔ یعنی شب قدر کے ان تین راتوں میں مشکوک ہونےکی کیا اہمیت ہے، مگریہ تین راتیں کتنی لمبی ہیں؟ ایسے افراد بھی تھے کہ جو پورے رمضان کو شب قدرمیں سے شمارکرتے تھے اوراس مہینے کی ہررات میں شب قدرکے اعمال انجام دیا کرتے تھے۔ لہذا ان راتوں کی قدرکریں۔

۶۳۵۸۴۷

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

ثقافت اور اس کے موضوعات کو پہچانے بغیر فقہ کوئی حکم نہیں دے سکتی

شبستان نیوز : آیت اللہ مبلغی نے کہا ہے کہ اعلیٰ اقدار اور نیک کاموں کو ترجیح دینے کے حوالے سے دین کی نظریے کو سامنے نہ رکھنا خدا پر افتراء باندھنے کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ ثقافت اور اس کے موضوعات کو پہچانے بغیر فقہ کوئی حکم نہیں دے سکتی۔

منتخب خبریں