خبرگزاری شبستان

چهارشنبه ۲۶ مهر ۱۳۹۶

الأربعاء ٢٨ المحرّم ١٤٣٩

Wednesday, October 18, 2017

وقت :   Sunday, June 18, 2017 خبر کوڈ : 68291
آیت اللہ جوادی آملی:
ظہورکی راہ ہموارکرنے میں پولیس کی ذمہ داریاں
خبررساں ایجنسی شبستان: اسلامی معاشرے کے سیاسی،معاشی، ثقافتی اورسماجی مختلف امورکی تدبیرکرنے والے کمانڈراورحکمران بھی امام زمانہ عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کے ظہورکی راہ ہموارکرنے میں موثرکرداررکھتے ہیں۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کے مطابق آیت اللہ جوادی آملی نے اپنی کتاب ( امام مہدی(عج)، موجود موعود) میں لکھا ہےکہ اسلامی معاشرے کے سیاسی، معاشی، ثقافتی اورسماجی مختلف امور کی تدبیرکرنے والےکمانڈر اورحکمران بھی امام زمانہ عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کےظہورکی راہ ہموارکرنے میں موثرکرداررکھتے ہیں، ان کی اہم ترین ذمہ داریوں کو اس طرح بیان کیا گیا ہے:

الف) عدالت: عدالت یعنی افراط اورتفریط کے درمیان حرکت کرنا کہ جس میں کوئی زیادتی اورنقص نہ ہو۔ اسلامی معاشرے کی مینجمنٹ کے تمام حالات میں عدل وانصاف کی مراعات بھی عصرغیبت میں اسلامی حکومت کے حکمرانوں کی  اہم ترین ذمہ داریوں میں سے ہے: وعلی الامراء بالعدل۔

ب) شفقت: افراطی محبت اورشفقت نیزافراطی شدت پسندی اورسختی معاشرے کے نظام کے لیے ایک آفت ہے۔ منتظرحکمرانوں کے لیے ضروری ہے کہ وہ محبت آمیزاورنرمی البتہ شجاعت اورطاقت کا راستہ اختیارکرکے معاشرے کی مہدوی حکومت کے ظہورکی جانب ہدایت کریں:(والشفقۃ)

پولیس کی ذمہ داریاں

پولیس،امت مسلمہ کی سرحدوں کی محافظ اوراسلامی نظام کی محافظ ہےکہ عصرانتظارفرج میں ان کی ذمہ داریوں کو اس طرح بیان کیا گیا ہے:

الف) نصر: توحیدی نظریے کی بنا پر ہرفتح اورنصرت اللہ تعالیٰ کی جانب اوراس کے حکم سے ہے: «وَمَا النَّصْرُ إِلَّا مِنْ عِنْدِ اللَّهِ الْعَزِيزِ الْحَكِيمِ» (1) نیز اللہ کی نصرت ہمیشہ ان افراد کے لیے ہےکہ جو دین الہی کی مددکرتے ہوئےاس کی حفاظت اورترویج کی کوشش کرتے ہیں:«إِنْ تَنْصُرُوا اللَّهَ يَنْصُرْكُمْ وَيُثَبِّتْ أَقْدَامَكُمْ»(2)

بنابریں پولیس اورفوج کی سب سے پہلی ذمہ داری دین کی سرحدوں کی حفاظت کرنا ہے تاکہ اس کے ذریعے وہ اللہ تعالیٰ کی نصرت اورمدد حاصل کرسکیں: «وَ عَلَى الْغُزَاةِ بِالنَّصْرِ».

ب) غلبہ:ان افراد پرطاقتوراورقدرتمند طریقے سےبرتری کہ جو توحیدی نظریےکے ساتھ جنگ کرتے ہیں اوریہ حضرت بقیۃ اللہ الاعظم عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کا مطالبہ ہے۔ دعا کے اس جملےکی بنا پرایک لحاظ سے ٹیکنیکل طاقت اوردفاع کے لیےجدید ترین اسلحہ کی فراہمی اوردوسری جانب ایمان، صبراوراستقامت کی غرض سے کوشش بھی عصرغیبت میں فوج اورپولیس کی ذمہ داری ہے۔ جس طرح کہ قرآن کریم کی آیات بھی اس کی تاکید کرتی ہیں: «وَأَعِدُّوا لَهُمْ مَا اسْتَطَعْتُمْ مِنْ قُوَّةٍ وَمِنْ رِبَاطِ الْخَيْلِ تُرْهِبُونَ بِهِ عَدُوَّ اللَّهِ وَعَدُوَّكُمْ »(3)؛ «إِنْ يَكُنْ مِنْكُمْ عِشْرُونَ صَابِرُونَ يَغْلِبُوا مِائَتَيْنِ وَإِنْ يَكُنْ مِنْكُمْ مِائَةٌ يَغْلِبُوا أَلْفًا» (4)

مآخذ:

۱.سوره آل عمران، آیه 126

2.سوره محمد، آیه 7

3.سوره انفال، آیه 60

4.سوره انفال، آیه 65

۶۳۴۸۶۴

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

آیت اللہ جعفر سبحانی:

جوانی میں علم و دانش کے حصول پر توجہ دینی چاہئے

سماجی: ایران کے نامور عالم دین اور شیعہ مرجع تقلید آیت اللہ جعفر سبحانی نے کہا جوانی کے زمانے میں علم و دانش حاصل کرنے اور تالیف و تصنیف پر زیادہ توجہ دینی چاہئے انہوں نے کہا اس عمر میں زیادہ مطالعہ اور علمی مباحثہ کرکے اسے لکھنا چاہئے کیونکہ اس زمانے کا علم بڑھاپے میں انسان کے لئے روشن چراغ کی طرح ہوتا ہے۔

منتخب خبریں