خبرگزاری شبستان

دوشنبه ۲ بهمن ۱۳۹۶

الاثنين ٦ جمادى الأولى ١٤٣٩

Monday, January 22, 2018

وقت :   Wednesday, July 12, 2017 خبر کوڈ : 68608

حجاب کی حفاظت، اسلامی تعلیمات کا عملی اظہار اور حکم خدا کا احترام ہے
شبستان نیوز: ادارہ تبلیغات اسلامی آران و بیدگل کے سربراہ نے کہا ہے کہ حجاب کی حفاظت، اسلامی تعلیمات کا عملی اظہار اور اطاعتِ خداوندی کے ساتھ بلاواسطہ رابطہ ہے۔

ادارہ تبلیغات اسلامی آران و بیدگل کے سربراہ حجت الاسلام سمیع اللہ مردان نے اصفہان میں شبستان نیوز ایجنسی کے نمائندے سے بات چیت کے دوران اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ۱۲ جولائی کو مسجد گوہر شاد میں خونین واقعہ پیش آیا جس میں مسلمانوں اور معاشرے کے متدین طبقے نے مرجع عظام اور علمائے اسلام کی زیر سرپرستی رضا خان حکومت کی طرف سے کیے جانے والے کشف حجاب (حجاب پر پابندی) کے اقدام کے خلاف مظاہرہ کیا تھا۔ رضا خان کے سپاہیوں نے مسجد گوہر شاد پر حملہ کیا اور کئی افراد کو شہید کر دیا۔

انہوں نے کہا کہ حجاب ایک ایسی ڈھال ہے جو خاندان کو ٹوٹنے اور بکھرنے سے بچاتی ہے۔ حجاب انفرادی طور پر عورت کی شخصیت کی حفاظت کرتا ہے ار اجتماعی طور پر جوانوں کو انحراف سے بچاتا ہے اور معاشرے کے اندر اخلاقی فتنہ و فساد کی روک تھام کرتا ہے۔

حوزہ علمیہ اور یونیورسٹی کے استاد نے اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ بے حجابی اور بد حجابی شریعت اسلام کے خلاف ہے۔

انہوں نے اس بات کو پوری شد و مد سے بیان کیا کہ حجات کی حفاظت، اسلامی تعلیمات کا عملی اظہار اور حکم خدا کا احترام ہے۔

انہوں نے کہا حجاب کا پہلا اثر جو ایک خاندان پر پڑتا ہے وہ انفرادی اور شخصی آرام و سکون ہے جو اجتماعی امن و امان اور آرام و سکون کا پیش خیمہ ہے۔

641268

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

دوسروں کو امن سے محروم کرنے کا وقت ختم

خبررساں ایجنسی شبستان اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے آج بروز پیر فایننشل ٹائمز میں اپنے ایک بیان میں اس بات پر زور دیا کہ آج ماضی کے برعکس دوسروں کو امن سے محروم کرنے کا وقت ختم ہو چکا اور سیکورٹی نیٹ ورک قائم کرنے کا وقت آ پہنچا ہے اور امن کو صرف اپنے لئے نہیں بلکہ دوسروں کے لئے بھی برقرار کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خلیج فارس کے علاقےمیں ایک خاص گروہ کیلئے امن قائم کرنے کا خیال اب ماضی کا حصہ بن چکا ہے اس لئے کہ خلیج فارس کے علاقے کے تمام ملکوں کے مفادات مشترکہ ہیں۔

منتخب خبریں