خبرگزاری شبستان

شنبه ۲۷ آیان ۱۳۹۶

السبت ٢٩ صفر ١٤٣٩

Saturday, November 18, 2017

وقت :   Thursday, July 13, 2017 خبر کوڈ : 68626
حجۃ الاسلام عبدالکریم پاک نیا:
خودپسندی زندگی کو تباہ کردیتی ہے
خبررساں ایجنسی شبستان: خود پسندی اورغرورایک اخلاقی آفت ہےکہ بہت سےلوگ اس میں مبتلا ہیں۔ زندگی کی بہت زیادہ مشکلات کی بنیاد بھی یہی خود پسندی اورتکبر ہےتاہم اس سےنجات کا علاج بھی موجود ہے۔

حوزہ علمیہ قم کےاستاد حجۃ الاسلام عبدالکریم پاک نیا نےخبررساں ایجنسی شبستان کےنامہ  نگار سےگفتگو کے دوران افراد کے روابط پرخود پسندی جیسی اخلاقی برائی کی تاثیر کے بارے میں کہا ہے کہ اسلامی ثقافت میں اس روحانی اوراخلاقی بیماری کےبارے میں بہت اہم نکات موجو دہیں۔ انسان کو سالم زندگی بسرکرنے کے لیےمعاشرے کوان برائیوں سے پاک ومنزہ کرنا چاہیےاورجہاں تک ممکن ہو اس برائی سے اجتناب کرے۔

اس محقق نےمزیدکہا ہےکہ خود پسند اورمغرورافراد کی خصوصیات میں سےایک خصوصیت یہ ہے کہ عام طوپران افراد کی قدردانی کا کوئی معنی نہیں ہے۔ وہ اللہ تعالیٰ،انبیائے الہی اوراپنے اطراف کے ساتھ روابط کے حوالے سے شکرگزارنہیں ہوتے اوراپنے آپ کوبہترین سمجھتے ہیں اوراس طرح یہ افراد اپنی شخصیت کو نقصان پہنچا دیتے ہیں اوریہ لوگ ہمیشہ مضطرب ہوتے ہیں۔

انہوں نےکہا ہےکہ خود پسند اورمغرورافراد کی ایک اورصفت یہ ہےکہ وہ ہمیشہ اپنےکردار اور گفتگو میں دوسروں کی اہانت کے درپے ہوتے ہیں اوران کا یہی رویہ دوسروں کے ساتھ ان کے روابط کو نقصان پہنچاتا ہے۔

حجۃالاسلام پاک نیا نےمزید کہا ہےکہ روایت میں آیا ہےکہ خود پسند اورمغرورافراد دوسروں کےعلم ودانش سےمحروم ہوجاتے ہیں۔ اللہ تعالیٰ سورہ نوح کی آیت نمبر۷ میں فرماتا ہے: « وَإِنِّي كُلَّمَا دَعَوْتُهُمْ لِتَغْفِرَ لَهُمْ جَعَلُوا أَصَابِعَهُمْ فِي آذَانِهِمْ وَاسْتَغْشَوْا ثِيَابَهُمْ وَأَصَرُّوا وَاسْتَكْبَرُوا اسْتِكْبَارًا » اس آیت کی بنا پر خود پسند اورمغرورانسان حق بات سننے کےلیے تیارنہیں ہوتے اوردوسروں کےمشورے بھی ان کی خودپسندی کے خاتمےکا سبب نہیں بنتے ہیں۔

انہوں نےکہا ہےکہ حضرت امیرعلیہ السلام فرماتے ہیں: متکبراورمغرورانسان کو کوئی دوست نہیں ہوتا ہےکیونکہ ایسے افراد دوسرے لوگوں سے بہت زیادہ توقعات رکھتے ہیں جبکہ خود دوسروں کو کوئی اہمیت نہیں دیتے ہیں۔

انہوں نےنمازکو خود پسندی کا ایک بہترین علاج بتاتےہوئے کہا ہے کہ زندگی کے امتحانات اوراس کی سختیاں بہت اہم ہیں۔ انسان کو ہمیشہ خاضع ہونا چاہیے اوربعض اوقات یہ مشکلات انسان کی روح کی تربیت کرتی ہیں۔

۶۴۱۱۴۸

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

معاشرے کے اندر مشترکہ وقف کی ترویج ہونی چاہیے

شبستان نیوز : ادارہ اوقاف و خیراتی امور کے ثقافتی و سماجی امور کے جنرل ڈائریکٹر نے وقف کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ معاشرے کے اندر مشترکہ وقف کی ترویج ہونی چاہیے۔ امامزادوں کے حرم یا ان کے علاوہ دوسرے مقدس مقامات کی ملکیت میں اگر ان کے اپنے اوقاف ہوں تو وہ اپنے تعمیراتی اور ثقافتی امور کے اخراجات وہاں سے پورے کر سکتے ہیں۔

منتخب خبریں