خبرگزاری شبستان

دوشنبه ۲ بهمن ۱۳۹۶

الاثنين ٦ جمادى الأولى ١٤٣٩

Monday, January 22, 2018

وقت :   Thursday, July 13, 2017 خبر کوڈ : 68627
حجۃ الاسلام حمید برازش:
بے پردگی مذہبی اعتقادات کو کمزورکردیتی ہے
خبررساں ایجنسی شبستان: ایران کے صوبہ کہگیلویہ وبویراحمد کےمحکمہ اسلامی تبلیغات کے ڈائریکٹر نےمعاشرے کی اخلاقی اورمعاشرتی سلامتی کو حجاب اورپاکدامنی کی مراعات کے مرہون منت قراردیتے ہوئےکہا ہے کہ بے پردگی مذہبی اعتقادات کو کمزورکردیتی ہے۔

صوبہ کہگیلویہ وبویراحمد کے محکمہ اسلامی تبلیغات کے دائریکٹرحجۃ الاسلام حمید برازش نے  خبررساں ایجنسی شبستان کے نامہ نگارسےگفتگو کے دوران کہا ہےکہ خاندان ایک اہم ترین سماجی محکمہ اورزندگی کی بنیاد ہے۔

انہوں نے اسلامی اقدارکے انتقال میں خاندان کے بنیادی کردارکی طرف اشارہ کرتے ہوئےکہا ہےکہ اس وقت اسلام کے دشمن اورعالمی استعمار خاندان کی بنیادوں کے استحکام میں حجاب اورپاکدامنی کی تاثیر کی اہمیت سے آگاہ ہونے کی وجہ سے معاشرے میں بے پردگی کی ثقافت کی ترویج کے درپے ہے اوراس کے نتیجے میں اسلامی معاشرے کےخاندانی نظام کے خاتمہ ہوجائے گا۔

انہوں نےحجاب اورپردہ ایک ظاہری موضوع ہےکہ جوغیروں کے سامنےمحفوظ عورت کی حفاظت کرتا ہے اورپاکدامنی بھی تقویٰ اورقلبی اورباطنی کنٹرول ہے اورحجاب اورپاکدامنی ، خاندان کی بنیادوں کےاستحکام میں موثرکردار ادا کرتی ہے۔

حجۃ الاسلام برازش نےحجاب کو دین اسلام کےضروری ترین مسائل میں سے قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ قرآن مجید کی نظرمیں اس کی عدم مراعات کبیرہ گناہوں میں سےشمارہوتا ہے۔

انہوں نےحجاب اورپاکدامنی کی موجودہ صورتحال کو اس سرزمین کے لیے نامناسب قراردیتے ہوئےکہا ہےکہ حجاب اور پاکدامنی کےاستحکام کےلیے فقط میٹنگوں اوربلوں کی منظوری پرہی اکتفا نہیں کرنا چاہیے۔

۶۴۱۶۰۰

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

دوسروں کو امن سے محروم کرنے کا وقت ختم

خبررساں ایجنسی شبستان اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے آج بروز پیر فایننشل ٹائمز میں اپنے ایک بیان میں اس بات پر زور دیا کہ آج ماضی کے برعکس دوسروں کو امن سے محروم کرنے کا وقت ختم ہو چکا اور سیکورٹی نیٹ ورک قائم کرنے کا وقت آ پہنچا ہے اور امن کو صرف اپنے لئے نہیں بلکہ دوسروں کے لئے بھی برقرار کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خلیج فارس کے علاقےمیں ایک خاص گروہ کیلئے امن قائم کرنے کا خیال اب ماضی کا حصہ بن چکا ہے اس لئے کہ خلیج فارس کے علاقے کے تمام ملکوں کے مفادات مشترکہ ہیں۔

منتخب خبریں