خبرگزاری شبستان

دوشنبه ۲ بهمن ۱۳۹۶

الاثنين ٦ جمادى الأولى ١٤٣٩

Monday, January 22, 2018

وقت :   Saturday, July 15, 2017 خبر کوڈ : 68647

وقف بہت سے امور کی ترقی میں مؤثر کردار ادا کرتا ہے
شبستان نیوز: ہرمزگان کے گورنر نے کہا ہے کہ وقف جیسی سنت حسنہ ملک کے اندر بہت سے امور کی ترقی اور پیشرفت میں موثر کردار ادا کر سکتی ہے۔ معاشرے کے اندر اس سنت حسنہ کو زیادہ سے زیادہ ترویج دینے کی سنجیدہ کوششیں کرنی کی ضرورت ہے۔

بندر عباس سے شبستان نیوز ایجنسی کے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق ڈاکٹر جاسم جادری نے صوبہ ہرمزگان کے اوقاف اور فلاحی امور کے مرکزی ادارے کے کارکنان اور عہدیداران کے ساتھ ملاقات کی۔ ملاقات کے دوران انہوں نے کہا کہ اوقاف اور فلاحی امور کا ادارہ ایک ثقافتی اور دینی ادارہ ہے اور ملکی سطح پر اس ادارے کا اعلیٰ مقام حاصل کرنا ہرمزگان کے ادارہ اوقاف و فلاحی امور کی انتھک محنت کی دلیل ہے۔

انہوں نے ادارہ اوقاف و فلاحی امور ہرمزگان کے کارکنان اور عہدیداران کی محنتوں اور کوششوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی گروہ اور ٹیم کی کامیابی اسی وقت ممکن ہوتی ہے جب اس کے سب اراکین ایک دوسرے کے ساتھ مل جل کر کام کریں۔

ڈاکٹر جادری نے کہا کہ ادارے کے اندر اپنی ذمہ داریوں کی انجام دہی کے دوران ایک دوسرے کو برداشت کرنا اس ادارے کی ترقی اور اعلیٰ مقام پر لا کھڑا کرنے میں اہم  کردار ادا کرتا ہے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ایسی ہم آہنگی اور وحدت تمام اجرائی شعبوں اور اداروں میں کارفرما ہونی چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مرکزی ادارہ اوقاف و فلاحی امور سرکاری اداروں کا ذیلی شعبہ شمار کیا جاتا ہے لہذا صوبہ ہرمزگان کے ہر سرکاری ادارے کی ترقی اور کامیابی صوبے کے لیے سرمایہ افتخار ہے۔

641902

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

دوسروں کو امن سے محروم کرنے کا وقت ختم

خبررساں ایجنسی شبستان اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے آج بروز پیر فایننشل ٹائمز میں اپنے ایک بیان میں اس بات پر زور دیا کہ آج ماضی کے برعکس دوسروں کو امن سے محروم کرنے کا وقت ختم ہو چکا اور سیکورٹی نیٹ ورک قائم کرنے کا وقت آ پہنچا ہے اور امن کو صرف اپنے لئے نہیں بلکہ دوسروں کے لئے بھی برقرار کرنا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خلیج فارس کے علاقےمیں ایک خاص گروہ کیلئے امن قائم کرنے کا خیال اب ماضی کا حصہ بن چکا ہے اس لئے کہ خلیج فارس کے علاقے کے تمام ملکوں کے مفادات مشترکہ ہیں۔

منتخب خبریں