خبرگزاری شبستان

شنبه ۲۹ مهر ۱۳۹۶

السبت ١ صفر ١٤٣٩

Saturday, October 21, 2017

وقت :   Sunday, August 13, 2017 خبر کوڈ : 68929

ساس بہو میں اختلاف کی اصل وجہ، دینی مسائل سے ناآشنائی اور ایک دوسرے کا عدم احترام
شبستان نیوز : خاندانی امور کے ماہر اور مشیر نے کہا ہے کہ ساس بہو کے درمیان پائے جانے والے اختلاف کی اصل وجہ نہ تو عقل ہے نہ دین اور نہ ہی منطق بلکہ اصل وجہ یہ ہے کہ ساس چاہتی ہے کہ میں اپنی بہو سے اس طرح کا سلوک کروں اور بہو چاہتی ہے کہ میں اپنی ساس سے ایسا سلوک کروں۔

خاندانی امور کے ماہر اور مشیر علی محمدی نے شبستان نیوز ایجنسی کے اجتماعی معاملات کے نامہ نگار سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ خاندانوں میں بعض اوقات ظلم و ستم اور حقوق الناس کی تلفی کے مظاہرے دیکھنے کو ملتے ہیں۔ انہوں نے اسی حوالے سے اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ ہمارے معاشرے میں موجودہ مسائل میں سے ایک اہم مسئلہ ساس بہو کا اختلاف ہے۔ اور نہایت افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ اکثر خاندان اس حوالے سے ظلم و ستم کا ارتکاب کر بیٹھتے ہیں۔

انہوں نے انتہائی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ مسئلہ اب ایک عام صورت اختیار کرتا جا رہا ہے۔ انہوں نے اس بات کا اعتراف بھی کیا کہ اس مسئلے میں کوئی قانونی اور عقلی معیار موجود نہیں ہے۔ تمام خاندان زندگی گزارنے کے حوالے سے اپنی علاقائی اور قبائلی رسوم و رواج کے حامل ہوتے ہیں اور اپنے الگ طور طریقے رکھتے ہیں اور اپنی زندگی گزارنے میں ان طور طریقوں پر سختی سے عمل کرتے ہیں، چاہیے وہ رسوم و رواج اچھے ہوں یا برے۔

انہوں نے کہا کہ اس مسئلے کی اصل جڑ یہ ہے کہ ساس اور بہو دینی مسائل سے آشنا نہیں ہوتیں اور ایک دوسرے کا احترام نہیں کرتیں۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اس حوالے سے ہمیں سستی کا مظاہرہ نہیں کرنا چاہیے۔

648147

کلیدی الفاظ:
|
|
|

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

ہنر، جنگ و دہشت سے مقابلے کا ہتھیار ہے

شبستان نیوز : وزارت امور خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی نے ’’اعلان گفتگو‘‘ نامی پوسٹرز کی نمائش میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس نمائش میں موجود ہر پوسٹر اتنی طاقت رکھتا ہے کہ سینکڑوں ڈونلڈ ٹرامپ کو جواب دے سکے۔

منتخب خبریں