خبرگزاری شبستان

چهارشنبه ۱ آذر ۱۳۹۶

الأربعاء ٤ ربيع الأوّل ١٤٣٩

Wednesday, November 22, 2017

وقت :   Friday, October 20, 2017 خبر کوڈ : 69835
حامد کرزایی:
افغانستان میں امریکی پالیسیاں، شدت پسندی میں اضافےکا باعث بنی ہیں
خبررساں ایجنسی شبستان: افغانستان کےسابق صدرنےاس ملک میں امریکی پالیسیوں کا ناکام اورشدت پسندانہ اقدامات میں اضافےکا سبب قراردیا ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان نے روسیہ الیوم کے حوالے سےنقل کیا ہےکہ افغانستان کے سابق صدر حامد کرزایی نے اس بات پرزوردے کرکہا ہےکہ افغانستان میں امریکی پالیسیاں ناکام ہوئی ہیں اوران کی وجہ سے اس ملک میں شدت پسندانہ اقدامات میں اضافہ ہوا ہے۔

انہوں نے (والدای) نامی چودہویں بین الاقوامی سیمینار سےخطاب کرتے ہوئےکہا ہے کہ میرا شمار ان افراد میں سے ہوتا ہےکہ جو افغانستان میں امریکی پالیسیوں پرشدید تنقید کرتا ہےکیونکہ یہ پالیسیاں ناکام ہوچکی ہیں اوران کی وجہ سے شدت پسندانہ اقدامات میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے۔

حامد کرزایی نے مزید کہا ہےکہ افغانستان میں دہشتگرد گروہ داعش کو امریکیوں کی حمایت حاصل ہے۔

انہوں نے اس بات پرزوردے کرکہا ہے کہ بہت سے ممالک پوچھتے ہیں کہ کیا دہشتگردی کو فروغ مل رہا ہے یا یہ کہ ہم حقیقت میں اس کے ساتھ جنگ کررہے ہیں؟

انہوں نےامریکہ سےمطالبہ کیا ہےکہ وہ افغانستان میں اپنی پالیسیوں کی شکست کا اعتراف کرے کیونکہ اگراس نے یہ کام نہ کیا تو شدت پسدانہ کھیل کا خاتمہ نہیں ہوگا۔

انہوں نے روس کے صدرولادیمیرپیوٹن سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس کے ملک کی جانب مدد کا ہاتھ بڑھائے اورخطے میں امریکی پالیسیوں پراثرانداز ہو۔

663650

 

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

عرب لیگ کے بیان پر حزب اللہ کے سربراہ کا شدید ردعمل

خبررساں ایجنسی شبستان حزب اللہ کے سکریٹری جنرل سید حسن نصراللہ نے اپنے خطاب میں حزب اللہ اور ایران کے خلاف عرب لیگ کے اجلاس کے اختتامی بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ حزب اللہ اور ایران پر دہشت گردی کی حمایت کا الزام کوئی نئی بات نہیں ہے بلکہ دشمنوں کی طرف سے ہمیشہ اس قسم کے الزامات عائد کئے جاتے رہے ہیں

منتخب خبریں