خبرگزاری شبستان

چهارشنبه ۱ آذر ۱۳۹۶

الأربعاء ٤ ربيع الأوّل ١٤٣٩

Wednesday, November 22, 2017

وقت :   Saturday, October 21, 2017 خبر کوڈ : 69856

داعش کی تباہی اورتکفیری ظلمانی تفکرکےجاری رہنےکے بارے میں نہ ختم ہونے والے ابہامات
خبررساں ایجنسی شبستان: گزشتہ چند ہفتوں سے دہشتگرد گروہ داعش کےخاتمےکا مسئلہ روزہ مرہ کے مسائل میں تبدیل ہوچکا ہے اورکہنا چاہیےکہ لبنان اورعراق میں شکست کے بعد اب شام میں داعش اپنی آخری سانسیں لے رہا ہے تاہم اس کا مطلب تکفیری ظلمانی تفکرکا خاتمہ نہیں ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق النشرہ نےخلیل الخوری کے تحریرکردہ آرٹیکل میں لکھا ہےکہ داعش درحقیقت ایک ایسے نظریےکی پیداوارہے کہ جو انسان کے لیے کسی قدرومنزلت کا قائل نہیں ہے۔ جب کہ تمام آسمانی ادیان دنیا اورآخرت میں انسان کی کرامت کے قانون ک بنا پراس کی سعادت کو پورا کرنے پرقائم ہیں۔ داعش اپنے انجام کو پہنچ چکی ہے لیکن اس دہشتگرد گروہ کے بارے میں بہت زیادہ سوالات موجود ہیں اورشاید تباہی کے بعد بھی ان سوالوں کی طرح وہ تفکربھی باقی رہے۔

1۔  ان آخری مہینوں میں اپنے ٹھکانوں کو چھوڑنے والے ہزاروں دہشتگرد اس وقت کہاں ہیں؟  کس طرح اتنی تعداد بخارات بن گئی ہے اورفقط ایک چھوٹا سا گروہ ادھرادھرباقی بچ گیا ہے؟

2۔ کیا یہ ہزاروں افراد ہلاک ہوچکے ہیں؟ کیا یہ احتمال بعید ہے؟ اگروہ جنگوں میں مارے جاچکے ہیں تو ان کی لاشیں کہاں ہیں؟

3۔ کیا یہ موضوع اسرارمیں سے ہے اورروزبروزاس کے ابہام میں اضافہ ہورہا ہے؟

4۔  امریکہ نے تین سال پہلے کیوں کہا تھا کہ تین سے دس سال تک داعش کا قبضہ رہے گا لیکن فقط وہ تین سال تک جاری رہا؟

5۔  مغربی ممالک بالخصوص امریکہ کی پالیسیوں کے مقابلے میں کیا جواب دیا جاسکتا ہے کہ جب داعش کے علاقوں میں امریکی جہازاترکراس گروہ کے بعض سرکردہ عناصرکو اپنے اپنے ملکوں کی طرف لوٹا دیا گیا تھا؟

6 ۔ ان علاقوں میں اترنے والےجہازوں کا داعش کےعناصرکی جانب سے کسی قسم کی مزاحمت کا سامنا کیوں نہیں کرنا پڑا ہے؟ امریکی اوریورپی ذرائع نے ہوائی جہازوں کے اترنے کی باتیں توکی تھیں لیکن داعشی سرکردہ عناصرکوپیچھے دھکیلنے کے لیے کمانڈوکے ساتھ داعش کےعناصر کی کسی جھڑپ کا ذکرنہیں کیا گیا تھا؟ کیا ان کے درمیان پیدا ہونے والی ہم آہنگی کو سمجھنے کے لیے بہت زیادہ ذہانت اورذکاوت کی ضرورت ہے؟

7۔ اس سوال کی کیا وضاحت ہوسکتی ہےکہ شام اورعراق کے اندرکھلے بیابان میں آمدورفت کرنے والے داعش کےعناصرکے خلاف کوئی حملہ نہیں کیا گیا ہےاورداعش کےخلاف بننے والے بین الاقوامی اتحاد کےجنگی جہازوں نے ان پرکوئی پروازنہیں کی ہے؟ قابل ذکرہے کہ ان جہازوں نے ان قافلوں اوران کے جنگی آلات پرایک میزائل بھی نہیں مارا ہے۔

8۔  کونسا خارجی ملک سب سےپہلے داعشیوں کی جانب سے دہشتگرد عناصرکا ہدیہ قبول کرے گا؟

 اس المناک واقعہ کے اسرارکب ظاہرہوں گے؟

663725

 

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

عرب لیگ کے بیان پر حزب اللہ کے سربراہ کا شدید ردعمل

خبررساں ایجنسی شبستان حزب اللہ کے سکریٹری جنرل سید حسن نصراللہ نے اپنے خطاب میں حزب اللہ اور ایران کے خلاف عرب لیگ کے اجلاس کے اختتامی بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ حزب اللہ اور ایران پر دہشت گردی کی حمایت کا الزام کوئی نئی بات نہیں ہے بلکہ دشمنوں کی طرف سے ہمیشہ اس قسم کے الزامات عائد کئے جاتے رہے ہیں

منتخب خبریں