خبرگزاری شبستان

دوشنبه ۴ تیر ۱۳۹۷

الاثنين ١٢ شوّال ١٤٣٩

Monday, June 25, 2018

وقت :   Wednesday, November 08, 2017 خبر کوڈ : 70138
حجۃ الاسلام روح اللہ حزیراوی:
اربعین کا پیدل مارچ کسی سیاسی تحریک سےوابستہ نہیں ہے
خبررساں ایجنسی شبستان: یونیورسٹیز کےاسلامی علوم کےانچارج نے اربعین کے پیدل مارچ کے مختلف پہلووں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہےکہ یہ عظیم اجتماع کسی بھی سیاسی جماعت اورتحریک سے وابستہ نہیں ہے بلکہ مکمل طورپرعوامی اجتماع ہے اوریہی وجہ ہےکہ یہ اس حد تک موثراورمستحکم ہے۔

یونیورسٹیز کی اسلامی علوم کےانچارج حجۃ الاسلام روح اللہ حزیراوی نے خبررساں ایجنسی شبستان کے نامہ نگارسےگفتگو کے دوران شیعوں کے طرززندگی پراربعین کے پیدل مارچ کی تاثیرکے بارے میں کہا ہےکہ اس حوالے سے امام حسن عسکری علیہ السلام کی ایک روایت ہےکہ جس کی بنا پرزیارت اربعین کوشیعوں کی ایک علامت قراردیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا ہےکہ امام حسن عسگری علیہ السلام کی روایت سےجو چیزسمجھ آتی ہے وہ یہ ہے کہ شیعہ کوایک خاص وقت میں اپنےامام سے دوبارہ بیعت کرنی چاہیے اوراربعین، شیعہ ثقافت میں امام کی بیعت کی علامت شمارہوتی ہے۔

حجۃ الاسلام حزیراوی نےاربعین کے پیدل مارچ کے تمدن ساز پہلووں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اللہ کا وعدہ حق ہے اوراس میں کوئی شک نہیں ہےکہ حضرت حجت علیہ السلام ظہور کریں گے اورتمام ادیان کے پیروکارظہورکا عقیدہ رکھتے ہیں۔ لہذا الہی وعدوں کے تحقق کے لیے ہمیں اللہ کے دین کی مدد کرنی چاہیے۔

انہوں ںے مزید کہا ہےکہ عراق میں امام زمانہ علیہ السلام کی حکومت کی تشکیل اورآج زیارت اربعین سے یہ چیزسمجھ آسکتی ہےکہ اربعین کا پیدل مارچ تمدن سازی کی صلاحیت رکھتا ہے کیونکہ اس اجتماع میں مختلف ادیان ومذاہب کے لوگوں کی شرکت اوراس سرزمین کی طرف حرکت کہ جہاں پرحضرت امام مہدی علیہ السلام حکومت کریں گے، یہ سب ایک عالمی اورتمدنی حکومت کی تشکیل کے لیے تمرین کی علامت ہے۔

انہوں نے تمدن سازی کے لوازمات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ تمدن سازی کی ایک خصوصیت اس کا عوامی ہونا ہے اورآج اربعین کے پیدل مارچ میں یہ چیزنمایاں ہے کیونکہ یہ خالصتا ایک عوامی کام ہے اورکسی حکومت سے وابستہ نہیں ہے۔

حزیراوی نےکہا ہےکہ اگرہم اربعین کی اس حرکت کو امام زمانہ علیہ السلام کی حکومت کے دورکے ساتھ تشبیہ دیں تو آج تقریبا تین کروڑزائرین جمع ہوتے ہیں لیکن حضرت حجت علیہ السلام کے ظہورکے بعد اگرتمام مسلمان اورشیعہ اپنے امام کی ملاقات کے لیےآنا چاہیں توکتنی صلاحیتوں کی ضرورت ہے اورعراقی عوام سے کس قسم کی خدمات کی توقع کرنی چاہیے؟

665431

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

سردارحسین سلامی:

مشترکہ زندگی کی بنیاد محبت اوردرگزرپرقائم ہے

خبررساں ایجنسی شبستان: سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کےکمانڈران چیف نےاس مطلب کہ اسلام اورایران نے ہمیں ایک واحد جسم کےعنوان آپس میں جوڑا ہوا ہے،کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشترکہ زندگی کی بنیاد محبت اوردرگزرپرقائم ہے۔

منتخب خبریں