خبرگزاری شبستان

چهارشنبه ۱ آذر ۱۳۹۶

الأربعاء ٤ ربيع الأوّل ١٤٣٩

Wednesday, November 22, 2017

وقت :   Friday, November 10, 2017 خبر کوڈ : 70156

ایرانی وزیر خارجہ نے بحران یمن کے حل کے لیے چار نکاتی تجویز کا اعادہ کیا
خبررساں ایجنسی شبستان ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے ایک بار پھر بحران یمن کے پرامن حل اور جنگ کے خاتمے کے لیے تہران کی چار نکاتی تجویز کا اعادہ کیا ہے۔

اپنے ایک ٹوئیٹ میں ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے بحران یمن کے بارے میں، اس چار نکاتی تجویز کا اعادہ کیا ہے، جو تہران نے سن دو ہزار پندرہ میں اقوام متحدہ کو پیش کی تھی۔ اس تجویز میں جنگ بندی کے قیام، انسانی امداد کی فراہمی، یمنی گروہوں کے درمیان مذاکرات اور وسیع البنیاد حکومت کی تشکیل کی تجویز شامل ہے۔
وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے یہ بات زور دے کر کہی کہ ڈھائی سال کا عرصہ گزر جانے اور بڑی تعداد میں عام لوگوں کے جانی نقصان کے بعد بھی امن کی یہ تجویز قابل عمل ہے۔
قابل ذکر ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران شروع ہی سے بحران یمن کو پرامن طریقے سے حل کیے جانے کی ضرورت پر زور دیتا آیا ہے اور اسی پالیسی کے تحت تہران نے امن کے لیے چار نکاتی تجویز بھی پیش کی تھی۔
سعودی عرب اور اس کے اتحادی ممالک، یمن میں قیام امن اور سیاسی راہ حل کے بجائے مسلسل جنگ اور جارحیت جاری رکھنے پر مصر ہیں۔

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

عرب لیگ کے بیان پر حزب اللہ کے سربراہ کا شدید ردعمل

خبررساں ایجنسی شبستان حزب اللہ کے سکریٹری جنرل سید حسن نصراللہ نے اپنے خطاب میں حزب اللہ اور ایران کے خلاف عرب لیگ کے اجلاس کے اختتامی بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ حزب اللہ اور ایران پر دہشت گردی کی حمایت کا الزام کوئی نئی بات نہیں ہے بلکہ دشمنوں کی طرف سے ہمیشہ اس قسم کے الزامات عائد کئے جاتے رہے ہیں

منتخب خبریں