خبرگزاری شبستان

شنبه ۲۵ آذر ۱۳۹۶

السبت ٢٨ ربيع الأوّل ١٤٣٩

Saturday, December 16, 2017

وقت :   Tuesday, December 05, 2017 خبر کوڈ : 70483
ڈاکٹرحسن روحانی:
دنیا کو اسلامی مزاحمت کےمجاہدین کا شکریہ ادا کرنا چاہیے
خبررساں ایجنسی شبستان: ایرانی صدرنےاس مطلب کہ عراق اورشام میں دہشتگردوں کے ساتھ لڑنے والے مجاہدین کا خطےاوردنیا والوں کی گردن پربہت بڑا حق ہے، کی وضاحت کرتے ہوئےکہا ہے کہ دنیا کو اسلامی مزاحمت کےمجاہدین کا شکریہ ادا کرنا چاہیے۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق ایران کےصدرحجۃ الاسلام حسن روحانی نے 5 دسمبرکو وحدت اسلامی کانفرنس سے اپنےخطاب کی ابتداء میں پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اورامام جعفرصادق علیہ السلام کی ولادت باسعادت کی مناسبت سے ہدیہ تبریک پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سال وحدت اسلامی کانفرنس ایسےحالات میں منعقد ہورہی ہےکہ جب ہمیں دو شیریں اور کڑوے واقعات کا سامنا ہے۔ ہمارے خطےکا شیریں واقعہ دہشتگردوں پرخطےکی فورسزاورملتوں کی گرانقدرکامیابیاں ہیں۔ عراق، شام اورلبنان کی فوج اورعوام اوراسی طرح دہشتگردی کے ساتھ لڑنے والے ممالک آج خوش اورسرافراز ہیں کہ خطے میں دہشتگردی کی اصلی بنیاد تباہ ہوگئی ہے اور خطےکی ملتوں کے خلاف عالمی طاقتوں اورصہیونیوں کی سازشوں پرپانی پھرگیا ہے۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ البتہ دہشتگردی کو جڑوں سےاکھاڑپھینکنےاورخطےمیں ان کے وجود کے تمام اسباب کے خاتمےتک مسلمانوں کا یہ راستہ جاری رہنا چاہیے۔

ڈاکٹرروحانی نےکہا ہےکہ جن لوگوں نےعراق اورشام میں دہشتگردی کےخلاف جنگ کی ہے وہ خطےاوردنیا والوں کی گردن پربہت بڑا حق رکھتے ہیں۔ یہ دہشتگردی فقط خطےکے لیےہی خطرہ نہیں تھی بلکہ پوری دنیا کےلیےخطرہ ہے، امریکہ اوریورپ کے لیےخطرہ ہے۔ بنابریں جو انسان بھی دنیا کے امن وامان اوراستحکام کو پسند کرتے ہیں انہیں دہشتگردوں کےخلاف اسلامی مزاحمت کے مجاہدین کا شکریہ ادا کرنا چاہیے۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ افسوس سےکہنا پڑتا ہے کہ اس طرح نہیں ہے اوریہ ممالک ان حکومتوں اورافراد کا شکریہ ادا کرنےکی بجائے ان کو کمزورکرنےکی سازشیں کررہے ہیں۔

ایرانی صدرنےخطےکے دردناک واقعہ کی طرف اشارہ کرتے ہوئےکہا ہےکہ آج ہم خطے میں جس درد ناک مسئلےکا مشاہدہ کررہے ہیں وہ  یہ ہےکہ خطےکے بعض اسلامی ممالک واضح طورپر صہیونی حکومت کے ساتھ اپنے تعلقات کا اظہارکررہے ہیں اوروہ اس بہت بڑے منکرکو معروف میں تبدیل کرنے کی کوشش کررہے ہیں البتہ اس میں کوئی شک وشبہ نہیں ہے کہ خطے کی ملتیں اوردنیا کے مسلمان اس منحوس منصوبے کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

انہوں نے مزید کہا ہےکہ فلسطین کی عظیم ملت، خطےکی ملتیں، علماء، دانشوراورمسلمان جوان ہرگزصہیونی دشمن اوراس کےغاصبانہ قبضے کو فراموش نہیں کریں گے۔

ڈاکٹرحسن روحانی نے کہا ہےکہ ہم سب جانتے ہیں کہ امریکہ اورصہیونیوں نے دہشتگرد گروہوں کو بنایا ہے اوریہ ایک ایسی بات ہےکہ جس کا خود انہوں نے بھی اعتراف کیا ہے۔ ہم سب جانتے ہیں کہ کونسے افراد ان کی حمایت کرتے ہیں اورانہیں ٹیکنیکل معلومات فراہم کرتے ہیں اوراسلحہ اورمہلک ہتھیاروں سےمسلح کرتے ہیں۔ لیکن ہم نے دیکھا ہےکہ انہوں نے دوسروں کو ڈسنے کےلیے جو سانپ پالا تھا اب وہ انہیں بھی ڈس رہا ہے اوراب وہ بھی اسی دہشتگردی کا شکارہیں۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ اسلامی انقلاب کی کامیابی کےآغاز کے ساتھ ہی جب ایرانی عوام ترقی اور سربلندی کے مقام پرقرارپاتی تھی تو انہیں مختلف قسم کی سازشوں میں مبتلا کرکے ان کی ترقی کا موقع ضائع کردیا جاتا رہا ہے۔

ایرانی صدرنے آخرمیں کہا ہےکہ آج بھی ہم دیکھ رہے ہیں کہ ایران ترقی اورتوسیع کے راستے پرگامزن ہے لہذا وہ ایران اورخطے کے لیے نئے منصوبے بنا رہے ہیں۔ ایک دن شام دہشتگردی کی لعنت سےچھٹکارا حاصل کرلے گا۔ عراقی عوام بھی متحد ہوکراپنے ملک کی ترقی کے لیے کام کرے گی اوریمن بھی حملہ آورممالک کےظلم وستم سے نجات حاصل کرلےگا اوریمنی عوام حملہ آوروں کوعبرتناک شکست دے گی یہ سب باتیں درست ہیں لیکن ضائع ہونے والے مواقع کا کس طرح ازالہ ہوگا؟

673954

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

منتخب خبریں