خبرگزاری شبستان

شنبه ۲۵ آذر ۱۳۹۶

السبت ٢٨ ربيع الأوّل ١٤٣٩

Saturday, December 16, 2017

وقت :   Wednesday, December 06, 2017 خبر کوڈ : 70512
سالم الہادی:
وحدت سے مراد امت مسلمہ کی وحدت ہے
خبررساں ایجنسی شبستان: دارالسلام کے مفتی نےکہا ہےکہ وحدت، درحقیقت امت مسلمہ کے درمیان وحدت ہے نہ کہ شیعہ اورسنی کے درمیان۔ درحقیقت شیعوں اوراہل سنت کے درمیان کوئی فرق نہیں ہے اورفقط عقلی اورشرعی فرق موجود ہیں کہ جن کو ہوا دینا شرکا باعث بنتا ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق دارالسلام کےمفتی شیخ موسیٰ سالم الہادی نے5 دسمبرکو اکتیسویں بین الاقوامی وحدت اسلامی کانفرنس میں اپنے خطاب کے دوران اس کانفرنس کے شرکاء کو تنزانیہ کے مفتی اعظم کا سلام پہنچاتے ہوئےکہا ہے کہ اللہ تعالیٰ نے قرآن کریم میں تین قسم کی وحدت کا تعارف کروایا ہے۔ سب سے پہلے اللہ کی جانب سےانسانوں کے درمیان وحدت کا ذکرہےکہ جو اللہ کی جانب سے انسانوں کے لیے ایک امانت ہے۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ وحدت کی دوسری قسم، امت مسلمہ کے درمیان وحدت ہے کہ اللہ تعالیٰ قرآن کریم میں فرماتا ہےکہ امت مسلمہ کی وحدت انتہائی اہم ہے اورہم مسلمان جتنا بھی آپس میں اختلاف رکھتے ہوں آخرکارایک دوسرے کے درمیان وحدت کی جانب قدم اٹھانا چاہیے کیونکہ اسلام کے دشمن، مسلمانوں کےدرمیان اختلاف پرخوش ہوں گے۔

دارالسلام کےمفتی نےکہا ہےکہ امام خمینی اپنے ایک خطاب میں وحدت کے بارے میں فرماتے ہیں کہ وحدت درحقیقت امت مسلمہ کے درمیان وحدت ہےنہ کہ شیعہ اورسنی کے درمیان وحدت ، دراصل شیعوں اوراہل سنت کے درمیان کوئی فرق نہیں ہے اورفقط علمی اورشرعی فرق موجود ہیں کہ جن کو ہوا دینا شرکا باعث بنتا ہے۔

سالم الہادی نےآخرمیں کہا ہے ہ وحدت کی تیسری قسم توحیدی اورالہی ادیان کے درمیان وحدت ہے۔ تمام الہی ادیان کےانبیاء ایک ہی تھے۔ لہذا اس میدان میں دینی دستورات اوربزرگان دین سے تمسک کرنا چاہیےتاکہ اس میدان میں بھی وحدت اورسربلندی کی منزل پرفائزہوسکیں۔

674180

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

منتخب خبریں