خبرگزاری شبستان

پنج شنبه ۲۸ تیر ۱۳۹۷

الخميس ٧ ذو القعدة ١٤٣٩

Thursday, July 19, 2018

وقت :   Saturday, January 13, 2018 خبر کوڈ : 71003

مہدوی حکومت سے لوگوں کی توقعات
خبررساں ایجنسی شبستان: ایک عالم کہا کرتے تھےکہ جو انسان صبح کا منتظرہوتا ہے وہ صبح کے آنےتک بیکارنہیں بیٹھتا ہے بلکہ اگروہ تاریک گھرمیں ہو تو روشنی فراہم کرتا ہے اوراگرگھرٹھنڈا ہو تواسے گرم کرنے کی کوشش کرتا ہے؛ لہذا انتظارکا مطلب ہاتھ پرہاتھ رکھنا نہیں ہےبلکہ یہ ایک عمل کا نام ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق معاشرے کےماحول میں موجود شواہد اورماہرین کے اعتراف کےمطابق امام زمانہ علیہ السلام کی طرف توجہ اوران کےظہورکی تعجیل کےلیےکوشش کرنا دعائے(اللہم عجل لولیک الفرج) میں منحصرہوگئی ہوئی ہے اورجالب بات یہ ہےکہ ہرشخص ان دعاوں میں اپنی مشکلات کےخاتمے اورحاجات کے پورا ہونے کے درپے ہےکہ جو ایک عوامانہ انتظار ہے۔

نامہ نگارزہرا میرزا ثمری نے روزمرہ کی زندگی میں امام زمانہ عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کی توجہ اورایک منتظرکی ذمہ داریوں کے بارے میں کہا ہےکہ ظہورکے لیےایک ضروری اقدام یہ ہے کہ معاشرے کو کردار اوراخلاق کے لحاظ سے امام زمانہ علیہ السلام کو تسلیم کرنےکے لیےآمادہ ہونا چاہیے اورایک شخص کو امام زمانہ علیہ السلام کے سپاہی کی طرح اپنے اندراخلاقی فضائل کو پیدا کرنا چاہیے۔ لیکن جب تک انسان اپنےغیرپسندیدہ اعمال اوراخلاق پراصرارکریں اورمعاشرے میں عدل وانصاف قائم نہ ہو اس وقت تک امام زمانہ عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کے ظہورکی راہ ہموار نہیں ہوسکتی ہے۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ ہم توقع رکھتے ہیں کہ امام زمانہ علیہ السلام کےظہورکے ذریعے معاشرے میں عدل وانصاف قائم ہو اورپوری دنیا میں ظلم وستم کا خاتمہ ہوجائے اوردنیا کے تمام ظالم لوگ اپنے کیےکی سزا پالیں۔

ذاکراہل بیت علیہم السلام علی رضا پولاد نےامام زمانہ علیہ السلام کےظہورکی توقعات کے بارے میں کہا ہے کہ مجھے دنیا میں موجود ظلم وستم کےخاتمے اورآرام وسکون کے درپے ہونا چاہیے کہ جو اس وقت فلسطین، میانمار اوریمن کےمظلوم لوگوں پرڈھائےجارہے ہیں۔

شاعراہل بیت علیہم السلام سجاد شاکری نےبھی امام زمانہ علیہ السلام کے ظہورسےاپنی توقعات کی طرف اشارہ کرتے ہوئےکہا ہےکہ قرآنی آیات، دعاوں اوراحادیث میں واضح طورپر امام زمانہ علیہ السلام کے ظہورکے اہداف بیان ہوئے ہیں۔ مثال کے طورپر قرآن کریم فرماتا ہے:«أَنَّ الْأَرْضَ يَرِثُهَا عِبَادِيَ الصَّالِحُونَ» کہ زمین پرصالحین کی حکومت ہوگی یا دعاوں اوراحادیث میں زمین کےعدل وانصاف سے بھرجانے کی طرف اشارہ کیا گیا ہے: «یَملَأُ الله بِهِ الاَرضَ قِسطاً وَ عَدلاً کَما مُلِئَت ظُلماً و جَورا».

موصولہ رپورٹ کےمطابق مہدویت کے محقق حجۃ الاسلام حسن عبادی نےاس سوال کہ امام زمانہ علیہ السلام کے ظہورکا انتطارکس طرح ہونا چاہیے تاکہ وہ عوامانہ انتظارشمارنہ ہو؟ کے جواب میں کہا ہےکہ قرآن کریم نےامام زمانہ علیہ السلام کےانتظارکےلیےایک سنہری اصول پیش کیا ہے۔ اللہ تعالیٰ قرآن کریم میں فرماتا ہے: (إِنَّ اللَّهَ لا يُغَيِّرُ ما بِقَومٍ حَتّى يُغَيِّروا ما بِأَنفُسِهِم) درحقیقت اللہ تعالیٰ کسی قوم کی حالت اس وقت تک نہیں بدلتا جب تک وہ خود اپنی حالت نہ بدلے۔ الہی نعمتوں کے بارے میں  بھی اسی طرح کا قانون موجود ہےکہ اللہ تعالیٰ کبھی نعمتوں کو عذاب میں تبدیل نہیں کرتا مگریہ کہ خود لوگ اپنےاعمال اورکردارکے ذریعےاس نعمت کا کفران کردیں۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ اللہ تعالی ایک اورجگہ پرفرماتا ہے: «إِنَّكَ لا تَهْدِي مَنْ أَحْبَبْتَ وَ لكِنَّ اللَّهَ يَهْدِي مَنْ يَشاءُ وَ هُوَ أَعْلَمُ بِالْمُهْتَدِينَ) اے پیغمبرتم اپنی مرضی سےکسی کو ہدایت نہی دے سکتے ہو بلکہ یہ اللہ تعالیٰ کی ذات ہےکہ جو جس کو چاہے ہدایت کرے اوروہ ہدایت یافتہ لوگوں سےآگاہ ہے۔

عبادی نے آخرمیں کہا ہےکہ پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم انتظارکے بارے میں فرماتے ہیں: «اَفْضَلُ الْعِبادَةِ اِنْتِظارُ الْفَرَجِ) انتظارفرج افضل ترین عبادت ہے۔ یا پھرفرمایا: «أَفْضَلُ جِهَادِ أُمَّتِي انْتِظَارُ الْفَرَجِ) میری امت کا افضل ترین جہاد انتظارفرج ہے یا فرمایا:( افضل اعمال امتی انتظارالفرج من اللہ عزوجل) یعنی اللہ تعالیٰ کی جانب سے انتظارفرج میری امت کا افضل ترین عمل ہے۔ روایات سے واضح ہوتا ہےکہ انتظارایک عمل ہے اوران روایات کے مطابق انتظارفرج افضل ترین عمل ہے کہ جو جہاد کی قسم میں سے ہے۔

 681923

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

امریکی کانگرس میں گولان کی پہاڑیوں پرصہیونی حکومت کے تسلط کو تسلیم کرنےکا جائزہ لیا جائےگا

خبررساں ایجنسی شبستان: امریکی کانگرس گولان کی پہاڑیوں پرصہیونی حکومت کے تسلط اورقبضے کو تسلیم کرنے کے لیے ایک اجلاس منعقد کررہی ہے۔

منتخب خبریں