خبرگزاری شبستان

جمعه ۴ خرداد ۱۳۹۷

الجمعة ١١ رمضان ١٤٣٩

Friday, May 25, 2018

وقت :   Monday, January 22, 2018 خبر کوڈ : 71136

ایک امریکی عہدیدار کی طرف سے اسلام کی توہین
شبستان نیوز : امریکی ریاست کے ایک حکومتی عہدیدار نے کہا ہے کہ مختلف قسم کی نسلوں کے درمیان فرق ہونا چاہیے۔ اسی سلسلے میں اس نے اسلام اور مسلمانوں کی توہین بھی کی ہے۔

شبستان نیوز ایجنسی نے الیوم السابع کی روزنامہ واشنگٹن پوسٹ کے حوالے سے دی جانے والی خبر کو نقل کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ کے ایک چھوٹے شہر جکمن کے ایک اعلیٰ حکومتی عہدیدار نے ان دنوں لوگوں کی توجہ اپنی طرف مبذول کر رکھی ہے۔ یہ عہدیدار کم از کم ایک ہزار کے لگ بھگ لوگوں کو اپنے ساتھ جمع کر کے نسل پرستی کے حق میں اور اسلام کے خلاف زہر اگل رہا ہے۔

بعض نشریاتی اداروں نے ٹام کاوچینسکی نامی اس حکومتی عہدیدار کے طرف سے دیے جانے والے اسلام مخالف بیانات کے حوالے سے اپنی رپورٹس نشر کی ہیں۔ ان رپورٹس کے مطابق اس متعصب عہدیدار کا کہنا ہے کہ اسلام کی مغرب میں کوئی گنجائش نہیں ہے۔

ٹام کاوچینسکی نے ایک مقامی اخبار « Bangor Daily News » سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ دوسروں ممالک اور معاشروں سے امریکہ کی طرف آنے والے لوگوں کے سخت خلاف ہے۔

اس نے اپنے بیانات میں اسلام اور مسلمانوں کی توہین بھی کی ہے۔

ٹام کاوچینسکی کے ان اہانت آمیز بیانات کے بعد مختلف جگہوں پر سخت رد عمل دیکھنے میں آ رہا ہے۔

یاد رہے کہ امریکہ اور مغربی ممالک میں ان دنوں اسلام فوبیا پھیل رہا ہے جس کی وجہ سے آئے دن مختلف شہریوں کی طرف سے اسلام اور مسلمانوں کی اہانت پر مبنی رویے دیکھنے کو مل رہے ہیں۔

684271

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

آیت اللہ سیدمحمد حسینی ہمدانی:

اسلامی بیداری،بیت المقدس کی آزادی اورنئےاسلامی تمدن کی تشکیل کا سبب بنےگی

خبررساں ایجنسی شبستان:ایران کے صوبہ البرز کےاسلامی انقلاب کی کامیابی کی چالیسویں سال کی اسٹریٹجک اورپالیسی ساز کونسل کے سربراہ نےکہا ہےکہ بیداری اسلامی بیت المقدس کی آزادی اورنئےاسلامی تمدن کی تشکیل کا سبب بنے گی۔

منتخب خبریں