خبرگزاری شبستان

پنج شنبه ۶ اردیبهشت ۱۳۹۷

الخميس ١١ شعبان ١٤٣٩

Thursday, April 26, 2018

وقت :   Saturday, February 10, 2018 خبر کوڈ : 71437

حکومت کی بنیاد قضاوت پر ہے
شبستان نیوز : ایران کے اٹارنی جنرل نے کہا ہے کہ حکومت کی بنیاد قضاوت پر ہے۔ شریعت مقدس اسلامی نے قاضی کے لیے وہ شرائط رکھی ہیں جو کسی اور شعبے کے لیے نظر نہیں آتیں۔

خرم آباد سے شبستان نیوز ایجنسی کے نمائندے کی رپورٹ :

ایران کے اٹارنی جنرل حجت الاسلام و المسلمین جعفر منتظری نے آج ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کی بنیاد قضاوت پر ہے اور اس کے دوسرے شعبے اجرائی پہلو کے حامل ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اگر شریعت مقدسہ کی طرف دیکھا جائے تو اس نے قاضی کے لیے ایسی شرائط رکھی ہیں جو کسی اور شعبے میں ہرگز نظر نہیں آتیں۔

انہوں نے کہا کہ امیر المومنین حضرت علی علیہ السلام نے مالک اشتر کو جو خط لکھا تھا وہ حکومت کا ایک الٰھی منشور ہے۔ اگر اسے ملاحظہ کریں تو اس میں ایک جگہ امام علی علیہ السلام نے کاروباری معاملات میں واسطہ بننے والے ڈیلرز (بروکرز) کی مختلف اقسام بیان کی ہیں۔ اور جب ان کے حوالے سے قضاوت کے مرحلے پر پہنچتے ہیں تو کافی حیران کن مطالب بیان فرماتے ہیں۔

انہوں نے اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے کہا کہ آج عدلیہ کے پس فقط شرعی اور قانونی قضاوت کا حق ہی نہیں بلکہ اس کے علاوہ بھی بہت سے اختیارات عدلیہ کے پاس ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عدلیہ کے فرائض میں سے ہے کہ وہ لوگوں کے حقوق ان تک پہنچانے میں اپنی تمام کوششیں بروئے کار لائے۔

688833

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

آیت اللہ سید محمد شاہچراغی:

کام کرنا عبادت اور خدا کی راہ میں جہاد کرنے کے برابر ہے

سماجی: صوبہ سمنان کے امام جمعہ اور نمائندہ ولی فقیہ نے کہا کہ کام کرنا عبادت ہے اور خدا کی راہ میں جہاد کرنے کے مساوی ہے انہوں نے کہا مزدوروں کے حقوق کی رعایت کریں۔

منتخب خبریں