خبرگزاری شبستان

دوشنبه ۴ تیر ۱۳۹۷

الاثنين ١٢ شوّال ١٤٣٩

Monday, June 25, 2018

وقت :   Tuesday, March 13, 2018 خبر کوڈ : 71818
مصطفی دلشاد تہرانی:
امیرالمومنین(ع) کی اپنے گورنروں کو نصیحت
خبررساں ایجنسی شبستان: حکومت اورمینجمنٹ میں ذمہ داریاں مشترک ہوتی ہیں اوراگرکسی ادارے کے ملازمین کوئی غیرپسندیدہ کام کرتے ہیں تو اس کا اعلیٰ عہدیدارجوابدہ ہے اوروہ اپنےآپ سے ذمہ داری کو سلب نہیں کرسکتا ہے بلکہ وہ اپنے سے اوپرکے افسر، لوگوں اوراللہ کے سامنے جوابدہ ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق قرآن وحدیث یونیورسٹی کےعلمی بورڈ کے رکن مصطفی دلشاد تہرانی کے ٹیلیگرام میں آیا ہے: قدرت اورطاقت کی تقسیم کے ڈھانچے میں نہ تو نچلی اوردرمیانی سطح پرذمہ داریوں سے فرارکا کوئی مقام ہے اورنہ ہی اعلیٰ عہدوں میں ذمہ داریوں کو قبول نہ کرنےکا کوئی راستہ ہے۔

امام علی علیہ السلام عبداللہ بن عباس کہ جب وہ بصرہ کے گورنرتھے، کے نام خط میں اس طرح فرمایا: «فَارْبَعْ أَبَا الْعَبَّاسِ، رَحِمَکَ اللّهُ، فِيمَا جَرَى عَلَى لِسَانِکَ وَ يَدِکَ مِنْ خَيْرٍ وَ شَرٍّ، فَإِنَّا شَرِيكَانِ فِي ذلِکَ.» (نهج‌البلاغه، نامۀ ۱۸) پس اے ابوالعباس، اللہ تم پر رحم کرے تمہاری زبان اورتمہارے ہاتھ سے جو نیکی اوربرائی ظاہرہوتی ہے اسے انتہائی نرمی اوربردباری سے انجام دو کیونکہ ہم دونوں ہی اس کے نتائج میں برابرکے شریک ہیں۔

حکومت اورمینجمنٹ میں ذمہ داریاں مشترک ہوتی ہیں اوراگرکسی ادارے کی ملازمین میں کوئی چیز رونما ہوتی ہے تو اس کا اعلیٰ عہدیدارجوابدہ ہے اوروہ اپنے آپ سےذمہ داری کو سلب نہیں کرسکتا ہے بلکہ وہ اپنے سے اوپرکے افسر،لوگوں اوراللہ کے سامنے جوابدہ ہے۔

جب پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے معاذ بن جبہ کو یمن کا گورنربنا کربھیجا تو انہیں اس طرح فرمایا: «وَ اعْتَذِرْ إِلَى أَهْلِ عَمَلِکَ مِنْ كُلِّ أَمْرٍ خَشِيتَ أَنْ يَقَعَ إِلَيْکَ مِنْهُ عَيْبٌ يَعْذَرُونَکَ.»(کتاب الخراج، قاضی ابویوسف، ص ۱۱۸)  جس مقام پربھی تمہیں اپنےملازمین کےاعمال اورکردارمیں کوئی نقص اورعیب نظرآئے تو اس سےمعذرت طلب کرو تاکہ لوگ تمہاری معذرت کو قبول کرلو۔

691419

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

سردارحسین سلامی:

مشترکہ زندگی کی بنیاد محبت اوردرگزرپرقائم ہے

خبررساں ایجنسی شبستان: سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کےکمانڈران چیف نےاس مطلب کہ اسلام اورایران نے ہمیں ایک واحد جسم کےعنوان آپس میں جوڑا ہوا ہے،کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشترکہ زندگی کی بنیاد محبت اوردرگزرپرقائم ہے۔

منتخب خبریں