خبرگزاری شبستان

یکشنبه ۶ خرداد ۱۳۹۷

الأحد ١٣ رمضان ١٤٣٩

Sunday, May 27, 2018

وقت :   Tuesday, April 17, 2018 خبر کوڈ : 72070
حجۃ الاسلام فضلی:
جو عیب بھی ہےہم مسلمانوں میں ہے
خبررساں ایجنسی شبستان: شرمندگی کےعلاوہ کوئی اورجواب نہیں ہےکہ ہم اسلام، پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اوران کی اہل بیت علیہم السلام کی سنت پرعمل نہیں کرسکے ہیں۔ یہ کہ دوسرے افراد اس ثقافت کو لےلیں اوراس پرعمل کریں اوراس کے ذریعے لوگوں کے اذہان کو اسلامی اقدار کی طرف متوجہ کریں لیکن ہم اس بارے میں کوئی قدم نہ اٹھائیں۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کےمطابق میرے پاس سوائےشرمندگی کے کوئی جواب نہیں ہے کہ ہم اسلام اورپیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اوران کی اہل بیت علیہم السلام کی سنت پرعمل نہیں کرسکے ہیں۔ یہ کہ دوسرے لوگ اس ثقافت کو لے لیں اوراس پرعمل کریں اوراس کے ذریعے لوگوں کے اذہان کو اسلامی اقدارکی طرف متوجہ کریں لیکن ہم اس بارے میں کوئی قدم نہ اٹھائیں تو سوائے شرمندگی کے کچھ نہیں کہا جاسکتا ہے۔اسلام میں کوئی عیب ونقص نہیں ہے بلکہ جو عیب بھی ہے وہ ہم مسلمانوں میں ہے۔اسلام فقط نماز،روزے کا نام نہیں ہے۔ من لم یهتّم بامور المسلمین فلیس بمسلم. مسلمانوں کا ایک مسئلہ اورایک لحاظ سےکہا جاسکتا ہےکہ تمام لوگوں کی حیات جس سے وابستہ ہے وہ پانی اوراس کا صحیح استعمال ہے۔

کچھ عرصہ پہلے سوشل میڈیا پر منرل واٹرکی ایک بوتل کی تصویردیکھی تھی کہ جسے ایک آسٹریلوی کمپنی نے بھرا ہوا تھا۔ قابل توجہ نکتہ وہ عبارت تھی کہ جو اس پرلکھی ہوئی تھی کہ البتہ  وہ عبارت انگریزی زبان میں تھی۔(Do not waste water even if you were at a running stream. Prophet Muhammad. کسی وقت بھی پانی کو ضائع مت کریں یہاں تک کہ اگرآپ جاری نہرکے کنارے پرہی کیوں نہ ہوں۔ حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم)۔ یہ ایک جالب واقعہ تھا بالخصوص کہ جب ایک آسٹریلوی کمپنی نے پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ایک حدیث سے استفادہ کیا تھا اوراسےاپنی مصنوعات پراستعمال کیا تھا۔ بات یہ نہیں ہےکہ ہم کس قدراپنی مصنوعات اوراپنےاعمال میں دینی پیغامات اورمفاہیم کو استعمال کرتے ہیں؟ کیا اس بارے میں مزید تخلیقی اقدام نہیں کیا جاسکتا ہےکہ ہم بھی اپنی انڈسٹریل مصنوعات پردینی پیغام اورمفاہیم کو مدنظر قراردیں؟

میں نےاس تصویرکو دینی محقق حجۃ الاسلام والمسلمین فضلی کےلیے بھیجا اوران سےاس تصویر کے بارے میں ردعمل ظاہرکرنےکا کہاَ حجۃ الاسلام فضلی نےمجھےلکھا : میرے پاس سوائے شرمندگی کےکوئی جواب نہیں ہےکہ ہم اسلام اورپیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اوران کی اہل بیت علیہم السلام کی سنت پرعمل نہیں کرسکے ہیں۔ یہ کہ دوسرے لوگ اس ثقافت کو لے لیں اوراس پرعمل کریں اوراس کے ذریعے لوگوں کے اذہان کو اسلامی اقدارکی طرف متوجہ کریں لیکن ہم اس بارے میں کوئی قدم نہ اٹھائیں تو سوائے شرمندگی کے کچھ نہیں کہا جاسکتا ہے۔اسلام میں کوئی عیب ونقص نہیں ہے بلکہ جو عیب بھی ہے وہ ہم مسلمانوں میں ہے۔اسلام فقط نماز،روزے کا نام نہیں ہے۔ من لم یهتّم بامور المسلمین فلیس بمسلم. مسلمانوں کا ایک مسئلہ اورایک لحاظ سےکہا جاسکتا ہےکہ تمام لوگوں کی حیات جس سے وابستہ ہے وہ پانی اوراس کا صحیح استعمال ہے۔

پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نےفرمایا:(الوُضوءُ بِمُدِّ و الغُسلُ بِصاعٍ و سَيَأتي أقوامٌ بَعدي يَستَقِلّونَ ذلِكَ فَاُولئكَ عَلى خِلافِ سُنَّتي )  وضو کے لیے 750 گرام اورغسل کے لیے تین کلو پانی کافی ہے۔ میرے بعد ایک ایسا گروہ آئےگا کہ جو اس مقدارکو کافی نہیں سمجھے گا تو وہ میری سنت کا مخالف ہوگا۔ سوال یہ ہےکہ ہم جو اپنے آپ کو پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا پیروکار سمجھتے ہیں،اپنے آپ سے پوچھیں کہ ہم نے پانی سمیت دیگرتمام الہی نعمتوں سے کیسا برتاو کرتے ہیں کیا عملی طورپربھی ہم اپنے آپ کو پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا پیروکارپاتے ہیں؟

699732

 

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

خطیب مسجد فتح قاہرہ:

تمام آسمانی کتب ماہ مبارک رمضان میں نازل ہوئیں

سماجی: مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں مسجد فتح کے خطیب نے کہا تمام آسمانی کتب ماہ مبارک رمضان میں نازل ہوئی ہیں۔

منتخب خبریں