خبرگزاری شبستان

سه شنبه ۱ آیان ۱۳۹۷

الثلاثاء ١٣ صفر ١٤٤٠

Tuesday, October 23, 2018

وقت :   Thursday, May 10, 2018 خبر کوڈ : 72226
شیخ خالدا لملا:
شیعہ اورسنی کےدرمیان جنگ چھیڑنا عالمی استعمارکی سازش ہے
خبررساں ایجنسی شبستان: الملا نےعلمائےاسلام کے درمیان وحدت کو ضروری قراردیتے ہوئےکہا ہےکہ جب کوئی سنی عالم دین شیعہ عالم دین کےنزدیک ہوتا ہےتو اس پرشیعہ ہونے کا الزام لگا دیا جاتا ہےکیونکہ عالمی استعمار شیعوں اوراہل سنت کے درمیان جنگ چھیڑنا چاہتا ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان نےاسلامی علوم کی پیدائش اوراس کے فروغ میں شیعہ کا کردار نامی بین الاقوامی کانفرنس کی نیوز کمیٹی کےحوالے سےنقل کیا ہےکہ عراق کی علما جماعت کےجنوب ونگ کے سربراہ شیخ خالد الملا نے آج صبح مدرسہ علمیہ امام کاظم علیہ السلام کے پیغمبراعظم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نامی سیمینارہال میں اس کانفرنس سے اپنےخطاب کے دوران آنحضرت صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی خصوصیات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہےکہ جعفربن ابی طالب نےحبشہ کے بادشاہ سے کہا کہ ہم جہالت میں پڑی ہوئی قوم تھےکہ اللہ تعالیٰ نے ہم میں سے ہی ہمارے لیے ایک رسول بھیجا کہ جسے ہم صادق اورامین کےنام سے پہچانتے ہیں۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ اس وقت مسلمان کیوں کمزورہیں اوربیت المقدس آزاد نہیں ہوتا ہے،یہ اس دورمیں سوالات ہورہے ہیں۔

الملا نےمسلمانوں کی ایک دوسرے کی شناخت کی ضرورت پرزوردیتے ہوئےکہا ہے کہ اہل سنت اورشیعہ فرقوں اورادیان کی کتابوں سےایک دوسرے کو پہچانتے ہیں،یہ کتابیں تفرقہ ایجاد کرتی ہیں، مذاہب کی خصوصیات قابل احترام ہیں تاہم مذاہب کے پیروکاروں کو ایک دوسرے کے ساتھ کھلےدل سے ملنا چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا ہےکہ میں جس بھی شیعہ لائبریری میں گیا ہوں وہاں پراہل سنت کی کتابیں موجود ہیں لیکن اہل سنت کےعلما کو بھی اپنی ذاتی لائبریریوں میں شیعہ کتابوں سے استفادہ کرنا چاہیے۔

علمائےعراق جماعت کے جنوبی ونگ کے سربراہ نےکہا ہےکہ عراق میں شیعہ اوراہل سنت کے درمیان فاصلوں کوختم کےلیےبہت سے تجربات موجود ہیں۔ عراق میں تقریب مذاہب اسلامی ورلڈ اسمبلی کی کوششیں، حقیقت پرمشتمل ہیں اورمختلف انسٹی ٹیوٹس اس اسمبلی کے ساتھ تعاون کررہے ہیں۔

انہوں نےعلمائےاسلام کے درمیان اتحاد کو ضروری قراردیتے ہوئےکہا ہے کہ جب ایک سنی عالم دین ،شیعہ عالم کے قریب ہوتا ہے تواس پرشیعہ ہونےکا الزام لگا دیا جاتا ہے کیونکہ عالمی استعمارچاہتا ہےکہ شیعہ اوراہل سنت کے ایک دوسرے کے ساتھ دست  وگریبان ہوں۔ قائد انقلاب اسلامی نےفرمایا تھا کہ عراق اورشام میں جنگ،شیعہ اورسنی کی جنگ نہیں ہےبلکہ یہ مسلمانوں کےخلاف دہشتگردی کی جنگ ہے۔

انہوں نےآخرمیں کہا ہےکہ اگرہم ایک امت بننا چاہتے ہیں تو ہمیں رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی سنت اورسیرت کی طرف پلٹنا ہوگا۔

۷۰۴۴۹۴

 

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

8ویں بین الاقوامی کانگریس امام سجاد(ع) کا آغاز

سماجی: اسلامی جمہوریہ ایران کے شہر بندرعباس میں 8ویں بین الاقوامی کانگریس امام سجاد(ع) کا آغاز ہوچکا ہے جس میں دنیا بھر سے مسلمان دانشور، علماء، مفکرین اور عمائدین شرکت کررہے ہیں۔

منتخب خبریں