خبرگزاری شبستان

دوشنبه ۲۶ آذر ۱۳۹۷

الاثنين ٩ ربيع الثاني ١٤٤٠

Monday, December 17, 2018

وقت :   Tuesday, July 10, 2018 خبر کوڈ : 72706
حجۃ الاسلام محمد جواد یاوری:
امام صادق(ع) نےاسلامی تمدن کی ترقی کے لیےدین میں سوجھ بوجھ کی تاکید فرمائی ہے
خبررساں ایجنسی شبستان: امام صادق علیہ السلام نےتعلیمی سسٹم کی حرکت کو تیز کرنےکےلیے خلفاء اورگمراہ فرقوں کے غلط نظریات کی دھلائی کے علاوہ اسلامی تمدن کی ترقی کے لیے علم کے حصول، دین میں سمجھ بوجھ ، حدیث مکاتب فکرسے شیعوں کی حفاظت اوردرس وتدریس کی نشستیں منعقد کرنے کی تاکید فرمائی ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان نے طلیعہ کے حوالے سےنقل کیا ہےکہ باقرالعلوم یونیورسٹی کےعلمی بورڈ کے رکن حجۃ الاسلام والمسلمین محمد جواد یاوری نے تعلیمی سسٹم کی سربلندی اوراسلامی سائنسزاینڈ کلچرکی ترقی میں امام صادق علیہ السلام کے تمدنی کردار کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مالک بن انس کہتے ہیں کہ اموی دورحکومت میں ہم جعفربن محمد علیہما السلام سے روایت نقل کرنے کی قدرت نہیں رکھتے تھے اورعباسی دورحکومت میں بھی حالات اتنے سخت تھے کہ امام علیہ السلام  اپنے شیعوں کی جان کی حفاظت کے لیے بعض انہیں فقہی مسائل میں تقیہ کا حکم دیا کرتے تھے۔ بعض تقیہ کی وجہ سے شیعہ حدیث کو نقل کرنے میں خوف وہراس کا شکارہوتے تھے اوروہ اپنی حدیثی کتابوں کو چھپا دیا کرتے تھے۔ امام صادق علیہ السلام کوجب عراق میں وطن کیا گیا  تو شیعہ آسانی سےنکاح اورطلاق کے مسائل  نہیں پوچھ سکتے تھے لہذا وہ سبزی بیچنے والوں کی صورت میں آتے تھے اوراپنے سوالات کے جوابات پوچھ کرچلا جایا کرتے تھے۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ امام صادق علیہ السلام نےمکتب خلفاء کی نظریاتی صورتحال اورعلمی اور تعلیمی پالیسیون کے بارے میں فرمایا: رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے بعد لوگوں نے سابقہ امتوں کے راستے پرچلنا شروع کردیا ہے اوراللہ کے دین میں تبدیلی پیدا کرکے اسے اصلی راستے سے منحرف کردیا ہے، کچھ چیزوں کا اضافہ کردیا ہے اورکچھ چیزوں کو نکال دیا ہے۔ اس وقت ان کے اختیارمیں جو کچھ ہے وہ اس چیز کی ایک تحریفی صورت ہے کہ جواللہ کی طرف سے نازل کی گئی ہے۔

حجۃ الاسلام یاوری نےامام صادق علیہ السلام کےدورکی علمی سرگرمیوں کے بارے میں کہا ہے کہ امام علیہ السلام نے اس صورتحال کو دیکھتے ہوئے اپنی سرگرمیوں کو تیزکردیا تھا اورعلمی اور تعلیمی حرکت کو ہی اسلام کی نجات کا واحد راستہ جانتے تھے اورآپ نے معاشرے کی ضرورت کو سامنے رکھتے ہوئے شیعہ تعلیمی نظام کو فراہم کیا تھا۔ امام صادق علیہ السلام کی تعلیمی سرگرمیاں اس طرح کی تھیں کہ بعض اہل  سنت بھی شیعہ فقہی مسائل کو قبول کرنے پرمجبورہوگئے تھے۔

انہوں نے مزید کہا ہے کہ امام صادق علیہ السلام نے تعلیمی اصولوں کی ترقی اوران کے فروغ میں شیعہ علماء کے کردارکے بارے میں فرمایا ہےکہ اگرزرارہ، ابوبصیرلیث مرادی، محمد بن مسلم اور برید بن معاویہ عجلی نہ ہوتے تو کوئی ہم اورہماری احادیث سے باخبرنہ ہوتا۔ یہ افراد دین کے محافظ اوراللہ کےحلال وحرام میں میرے والد گرامی کےقابل اعتماد افراد ہیں۔ بالفاظ دیگرامام صادق علیہ السلام کا ایک اقدام ماہراورمجتہد افراد کی تربیت کرنا  تھا۔

۷۱۴۸۷۲

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

8ویں بین الاقوامی کانگریس امام سجاد(ع) کا آغاز

سماجی: اسلامی جمہوریہ ایران کے شہر بندرعباس میں 8ویں بین الاقوامی کانگریس امام سجاد(ع) کا آغاز ہوچکا ہے جس میں دنیا بھر سے مسلمان دانشور، علماء، مفکرین اور عمائدین شرکت کررہے ہیں۔

منتخب خبریں