خبرگزاری شبستان

چهارشنبه ۴ مهر ۱۳۹۷

الأربعاء ١٦ المحرّم ١٤٤٠

Wednesday, September 26, 2018

وقت :   Wednesday, July 11, 2018 خبر کوڈ : 72716

کیا سعودی فوجیوں کا خون، یمنی بچوں کےخون سےزیادہ رنگین ہے؟
خبررساں ایجنسی شبستان: سعودی عرب نے ایک شہنشاہی فرمان میں یمن کی جنگ میں شرکت کرنے والے فوجیوں کا شکریہ ادا کیا ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان نے«Business Standard» کےحوالے سےنقل کیا ہےکہ سعودی عرب نے ایک  سلطنتی فرمان میں یمن کی جنگ میں شرکت کرنے والے فوجیوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ یمن کی جنگ میں موجود تمام فوجی ہرقسم کی فوجی سزاوں اورڈسپلن کی خلاف ورزیوں سے معاف ہیں۔

قابل ذکرہےکہ سعودی عرب اورامارات کی حمایت یافتہ یمنی حکومت کی فورسزحوثی شیعوں کے ساتھ  جنگ کررہی ہیں کہ جس کے نتیجےمیں اس وقت تک دس ہزاریمنی مارے جاچکے ہیں اوریمن کو قحط اورخشکسالی سےدوچارکردیا ہوا ہے۔

سعودی عرب کی سرکاری خبررساں ایجنسی(SPA) سے شائع ہونے والے سلطنتی معافی نامہ میں  یمن میں انجام دیےجانے والے مظالم کی طرف اشارہ نہیں کیا گیا ہے۔

اس فرمان میں فقط یہ کہا گیا ہےکہ یہ اقدام یمن کی جنگ میں لڑنے والےفوجیوں کی قدردانی کی علامت ہے جبکہ انسانی حقوق کی تنظیموں نے کئی مرتبہ سعودی عرب پریمن میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا الزام لگایا ہے۔

اقوام متحدہ نے بھی کچھ عرصہ پہلےاپنی ایک رپورٹ میں اعلان کیا تھا کہ بہت سے یمنی بچوں کی موت کے پیچھے سعودی عرب کا ہاتھ ہے۔

الجزیرہ میں شائع ہونے والی رپورٹ کی بنا پر  ۲۰۱۷ء میں یمن پرسعودی اتحاد کے فضائی حملوں کے نتیجے میں ۳۷۰ یمنی بچے مارے جاچکے ہیں۔ اسی طرح گزشتہ سال۱۳۱۶ یمنی بچے مارے گئے ہیں یا معذور ہوگئے ہیں۔

۷۱۵۳۴۴

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

حجت الاسلام صادقی:

حضرت امام زمان(عج) کی حضرت علی اکبر(ع) سے شباہت

حجت الاسلام صادقی نے کہا حضرت علی اکبر(ع) کی خصوصیات میں سے ہے کہ ہمیشہ حالت جنگ میں رہتے تھے اور اس سے بڑھ کر اور کوئی چیز نہیں ہے کہ انسان اپنے زمانے کے امام کی شناخت کے بعد اپنی جان کو اپنے امام کیلئے قربان کرے۔

منتخب خبریں