خبرگزاری شبستان

سه شنبه ۲۹ آیان ۱۳۹۷

الثلاثاء ١٢ ربيع الأوّل ١٤٤٠

Tuesday, November 20, 2018

وقت :   Thursday, August 16, 2018 خبر کوڈ : 73117

منتظرین کے کرداراوراعمال پرغذا کی تاثیر
خبررساں ایجنسی شبستان: حجۃ الاسلام ملایی نےاس مطلب کہ حق کی حکومت کےظہورکےایک منتظرکوحلال اورپاکیزہ غذا استعمال کرنے کےعلاوہ کھانا کھانے کے آداب کی بھی مراعات کرنی چاہیے،کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہےکہ لقمہ حلال ایک اہم ترین موضوع ہےکہ جس پرتمام مسلمانوں بالخصوص امام زمانہ علیہ السلام کے منتظرین کو خاص توجہ دینی چاہیے۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کے مطابق مہدویت کے تخصصی سنٹر کےگروہ اخلاق وتربیت کے انچارج حجۃ الاسلام حسن ملایی نے منتظرانہ طرززندگی کےمختلف پہلووں کی شناخت کی ضرورت اوراس طرززندگی کو اختیارکرنےکے اسباب کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہےکہ ایک منتظرشخص کو اپنے طرززندگی میں کچھ اصولوں اورضوابط کی مراعات کرنی چاہیے کہ جن میں سے ایک منتطرشخص کی غذا کی کیفیت اورمقدارسے مربوط ہے۔ کیونکہ امام زمانہ علیہ السلام کے منتظرین کو ایک جانب سےقرآنی خطاب(فَلْیَنْظُرِ الْإِنْسانُ إِلى طَعامِهِ) کا سامنا ہے یعنی اپنی غذا میں دقت ہونی چاہیے اوردوسری جانب امام زمانہ علیہ السلام کی نصرت کے لیے منتظرین جسمانی لحاظ سے مضبوط اورقوی ہونا چاہیے لہذا ایسی غذائیں استعمال کریں کہ جو بدن کےلیےمفید ہوں۔ کیونکہ روایات کی بنا پرامام زمانہ علیہ السلام کے ساتھیوں کو بہت زیادہ قدرت اورطاقت کا مالک ہونا چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا ہے کہ ظہورکےمنتظرین کی ایک ذمہ داری حلال غذا کھانا ہےکیونکہ لقمہ حلال ایک اہم ترین موضوع ہےکہ جس پرتمام مسلمانوں خاص طورپرامام زمانہ عجل اللہ تعالیٰ فرجہ الشریف کے منتظرین کو خصوصی توجہ دینی چاہیے یعنی ایک منتظرکواس بات پرتوجہ دینی چاہیے کہ اس کی غذا کہاں سے آرہی ہے۔ بنابرین اس کی غذا کو حلال اورالہی دستورات کے مطابق ہونا چاہیے۔

حجۃ الاسلام ملایی نےقرآن کریم کی اس آیہ مجیدہ (فَكُلُوا مِمَّا رَزَقَكُمُ اللَّهُ حَلَالً) کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس آیہ مجیدہ سےمعلوم ہوتا ہےکہ لوگوں کوچاہیےکہ وہ حلال طریقے سےاپنی غذا حاصل کریں البتہ طیب سے مراد فقط ظاہری طورپرہی پاک ہونا نہیں ہےبلکہ ظاہری اورباطنی لحاظ سے بھی پاک وپاکیزہ ہونی چاہیے۔

انہوں نےمزید کہا ہےکہ امام صادق علیہ السلام اپنی ایک روایت میں فرماتےہیں: اللہ تعالیٰ نے اپنے ایک نبی کو وحی بھیجی کہ بندوں سے کہہ دو(لَا تَلْبَسُوا لِبَاسَ أَعْدَائِي وَلَا یطْعَمُوا طَعَامَ أَعْدَائِي وَلَا یَسْلُكُوا مَسَالِكَ أَعْدَائِي فَیَكُونُوا أَعْدَائِي كَمَا هُمْ أَعْدَائِي) مومنین سے کہہ دومیرے دشمنوں کا لباس نہ پہنو، میرے دشمنوں کی غذا نہ کھاو اورمیرے دشمنوں کے طورطریقوں اورطرززندگی کو اختیارنہ کرو کیونکہ اس صورت میں وہ بھی میرے دشمنوں کی طرح ہوجائیں گے۔ یہ روایت منتظرانہ طرززندگی کے جہادی ہونے کو ثابت کرتی ہے۔

مہدویت تخصصی سنٹرکے گروہ اخلاق وتربیت کے انچارج نےآخرمیں اس مطلب کہ حق کی حکومت کے ظہورکے ایک منتظرکو حلال اورپاکیزہ غذا استعمال کرنےکےعلاوہ کھانا کھانےکے آداب کی بھی مراعات کرنی چاہیے،کی وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس بارے میں بہت سی روایات نقل ہوئی ہیں۔ جیسا کہ آیا ہےکہ پیٹ بھرکرکھانا کھانے سےاجتناب کرنا چاہیے۔ کھانا کھانے سے پہلے (بسم اللہ الرحمن الرحیم ) پڑھنا چاہیے، دن کے وقت کھڑے ہوکراوررات کو بیٹھ کرپانی پینا چاہیے۔ مزید مطالعہ کے لیےآیت اللہ جوادی آملی کی کتاب( مفاتیح الحیات) کی طرف رجوع کریں۔

722152

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

8ویں بین الاقوامی کانگریس امام سجاد(ع) کا آغاز

سماجی: اسلامی جمہوریہ ایران کے شہر بندرعباس میں 8ویں بین الاقوامی کانگریس امام سجاد(ع) کا آغاز ہوچکا ہے جس میں دنیا بھر سے مسلمان دانشور، علماء، مفکرین اور عمائدین شرکت کررہے ہیں۔

منتخب خبریں