خبرگزاری شبستان

سه شنبه ۲۹ آیان ۱۳۹۷

الثلاثاء ١٢ ربيع الأوّل ١٤٤٠

Tuesday, November 20, 2018

وقت :   Sunday, August 19, 2018 خبر کوڈ : 73165
مصطفیٰ عباسی مقدم:
امام باقر(ع) کا فقہی ورثہ ہیومینیٹز کےلیےعظیم سرمایہ ہے
خبررساں ایجنسی شبستان: امام باقرعلیہ السلام سےہم تک جوزیادہ ترمعارف پہنچے ہیں وہ فقہ یاوہی معاشرے کےساتھ زندگی گزارنے کے علم کے بارے میں ہیں۔ آپ نے فقہ، لوگوں کے ساتھ معاملات کرنے، انسانی حقوق، افراد کے ایک دوسرے کے ساتھ مفادات جیسے موضوعات پرمطالب بیان کیے ہیں کہ جو ہیومینٹزکا ایک عظیم شعبہ شمارہوتا ہے۔

خبررساں ایجنسی شبستان نےطلیعہ کےحوالے سےنقل کیا ہےکہ وزارت اسلامی ثقافت وگائیڈنس کے شعبہ قرآن وعترت کےمشیرنےعلم دینی کی پیدائش میں اہل بیت علیہم السلام کی احادیث کےبےنیاز منبع کے بارے میں کہا ہےکہ دینی علم کا ایک اہم نظریہ معصومین بالخصوص امام باقرعلیہ السلام اورامام جعفرصادق علیہ السلام سے نقل ہونے والی احادیث ہیں کہ جو اسلام اورمذہب تشیع کی معرفتی بنیاد ہے۔

انہوں نے مزید کہا ہےکہ ہمارا عقیدہ ہےکہ معصومین سےجو کچھ نقل ہوا ہے وہ قرآنی معرفت کا انعکاس ہےکیونکہ انہوں نےقرآن کریم کے بابرکت دسترخوان سےاستفادہ کیا ہے۔ لہذا علماء اور دانشوروں پرذمہ داری عائد ہوتی ہےکہ وہ اہل بیت علیہم السلام کی معرفت کےذریعے خالص دینی نظریات کو حاصل کریں۔ اگراس مشن پربخوبی عمل کیا جائے تو ہیومینٹز، سوشیالوجی، فلسفی علوم اورعقلی علوم میں نئی جان پیدا ہوجاتی ہے۔ ائمہ نے ہماری زبان اورہماری سمجھ کےمطابق ہم تک الہی معرفت کو منتقل کیا ہے۔

عباسی مقدم نےکہا ہےکہ اسی طرح امام باقرعلیہ السلام کےشاگردوں نےتربیتی، سماجی اورفقہی موضوعات میں بھی مختلف مطالب بیان کیےہیں۔۔امام باقرعلیہ السلام نےفقہی میدان میں بہت زیادہ مطالب بیان فرمائے ہیں اورآج کل سیاسی ،تجارتی اورعدالتی حقوق وغیرہ سب اسلامی فقہ کے تحت آتے ہیں۔ امام باقرعلیہ السلام نےاس کےساتھ ساتھ اعتقادی موضوعات میں بھی اپنے شاگردوں کی تربیت کی ہے۔ توحید، قیامت، فلسفہ اورنقلی علوم سے مربوط مسائل کو بھی بیان فرمایا ہے۔

722548

 

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

8ویں بین الاقوامی کانگریس امام سجاد(ع) کا آغاز

سماجی: اسلامی جمہوریہ ایران کے شہر بندرعباس میں 8ویں بین الاقوامی کانگریس امام سجاد(ع) کا آغاز ہوچکا ہے جس میں دنیا بھر سے مسلمان دانشور، علماء، مفکرین اور عمائدین شرکت کررہے ہیں۔

منتخب خبریں