خبرگزاری شبستان

سه شنبه ۲۰ آذر ۱۳۹۷

الثلاثاء ٣ ربيع الثاني ١٤٤٠

Tuesday, December 11, 2018

وقت :   Thursday, October 04, 2018 خبر کوڈ : 73213

چہلم امام حسین(ع) کا اصلی ہدف حفظ وحدت ہے
سماجی: ایران میں مساجد کے ثقافتی سنٹر کے سربراہ نے کہا ہماری کوشش یہ ہے کہ چہلم امام حسین(ع) کی مناسبت سے زائرین کی خدمت کیلئے نصب کئے گئے خیموں میں وحدت و اتحاد کو ملحوظ خاطر رکھا جائے۔

خبررساں ایجنسی شبستان کی رپورٹ کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران میں مساجد کے ثقافتی سنٹر کے سربراہ حجت الاسلام ڈاکٹر حبیب رضا ارزانی نے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا اگر قرآن کتاب ہدایت ہے تو ہمیں جاننا چاہئے کہ اہل بیت(ع) اس کتاب کی طرف ہدایت کرنے والے ہیں۔

انہوں نے کہا ہم سب امام حسین(ع) کو کشتی نجات کے عنوان سے پہچانتے ہیں لیکن امام جعفر صادق(ع) فرماتے ہیں: ہم سب ائمہ اطہار(ع) کشتی نجات ہیں لیکن اس فرق کے ساتھ کہ کشتی امام حسین(ع) بیشتر نجات کا باعث ہے اور جلد ہی ان کی کشتی اپنی منزل و مقصود تک پہنچاتی ہے۔

حجت الاسلام ارزانی نے کہا ہم مساجد کے ثقافتی سنٹرز میں اپنی سرگرمیاں انجام دیتے ہیں جتنا ہم مساجد کے ساتھ تعلق استوار کریں اتنا ہی نقصان کم تر ہوگا۔ انہوں نے کہا مساجد کا کردار انقلاب اسلامی سے پہلے بھی اور اب بھی بہت اہمیت کا حامل ہے اور انقلاب اسلامی کی ترقی کا باعث ہے۔

انہوں نے مزید کہا دشمن کی کوشش ہے کہ ایران اور عراق کے اہل سنت اور اہل تشیع کے درمیان تفرقہ ایجاد کرے لیکن ہمیں دشمن کی ان غلیظ سازشوں کو ناکام کرنے کیلئے اتحاد کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑنا ہوگا۔

ڈاکٹر ارزانی نے مزید کہا کربلا کی جانب جانے والے تمام راستوں میں جو خیمہ زائرین کی خدمت کیلئے نصب کئے جارہے ہیں ان میں وحدت اور ہمدلی سے زائرین کی خدمت کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا جو کچھ ہمیں ملت عراق کے ساتھ جوڑتا ہے وہ نام "امام حسین(ع)" ہے۔

انہوں نے مزید کہا دیگر ممالک میں بہت سارے مختلف پروگراموں کا انعقاد ہوتا ہے لیکن کوئی پروگرام بھی حضرت امام حسین(ع) کے چہلم کے ساتھ مطابقت نہیں رکھ سکتا کیونکہ اس کی بہت زیادہ عظمت اور اہمیت ہے۔

731194

 

تبصرے

نام :
ایمیل:(اختیاری)
رائے ٹیکسٹ:
ارسال

تبصرے

سروس کی خبروں کی سرخیاں

8ویں بین الاقوامی کانگریس امام سجاد(ع) کا آغاز

سماجی: اسلامی جمہوریہ ایران کے شہر بندرعباس میں 8ویں بین الاقوامی کانگریس امام سجاد(ع) کا آغاز ہوچکا ہے جس میں دنیا بھر سے مسلمان دانشور، علماء، مفکرین اور عمائدین شرکت کررہے ہیں۔

منتخب خبریں